طور خم بارڈرسیل ، کوئی افغان باشندہ دستاویزات کے بغیر سرحد عبور نہیں کریگا ، سکیورٹی حکام

طور خم بارڈرسیل ، کوئی افغان باشندہ دستاویزات کے بغیر سرحد عبور نہیں کریگا ...

 اسلام آباد،خیبر ایجنسی(این این آئی) سکیورٹی فورسز نے طورخم پر پاک افغان بارڈر کو سیل کر دیااور افغانستان سے آنے والے تمام افغان باشندوں کے دستاویز چیک کئے جا رہے ہیں ۔ذرائع کے مطابق سکیورٹی فورسز نے افغانیوں سے دستاویز ات کی جانچ پڑتال کرنے کیلئے طورخم پاک افغان بارڈر کو سیل کر دیا اور بغیر دستاویز کسی بھی افغان باشندے کو ملک میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ذرائع کا مزیدکہنا ہے کہ طورخم پر پاک افغان بارڈر سے کوئی بھی شخص بغیر ویزہ داخل نہیں ہوسکے گا، مقامی حکام نے کل لاؤڈ سپیکر کے ذریعے اعلانات کر کے بارڈر کے آس پاس افغان مہاجرین کو متنبہ کیا کہ آج کے بعد کوئی بھی افغان باشندہ سفر ی دستاویزات کے بغیر پاک افغان بارڈرطورخم عبور نہیں کریگا،پاکستانی حکام نے طورخم بارڈر پر سکیورٹی بڑھا دی ہے ،دوسری طرف خیبر پختونخوا حکومت نے افغان مہاجرین کی مدت قیام کی توسیع کی درخواست کی مخالفت کر دی ہے ۔پولیٹیکل انتظامیہ لنڈیکوتل طورخم کے ایک آفیشل کے مطابق خیبر رائفل نے لاؤڈ سپیکر کے ذریعے اعلان کیا کہ یکم جون 2016سے قانونی سفری دستاویزات کے بغیر کسی بھی شخص کو طورخم بارڈ کے ذریعے پاکستان داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ طورخم بارڈ ذرائع کے مطابق گزشتہ ماہ حکام نے افغان مہاجرین کو 31مئی کی ڈیڈ لائن تھی جس کے بعد ان کو متنبہ کیا گیا تھا کہ بغیر سفری دستاویزات کے انھیں پاکستان میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ پاکستانی حکام نے نیشنل ایکشن پلان پر عمل درامد کر تے ہو ئے پاک افغان بارڈر کو سیکور کر نے کے لئے باڑ لگانے اور بغیر سفری دستاوزات کے افغان باشندوں کو پاکستان میں داخل ہو نے پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا تھاجس کے باعث دونوں ممالک میں کئی دن کشیدگی پیداہو ئی تھی اور افغان حکومت نے باربار مدت قیام کے لئے توسیع کی درخواست دی تھی جو آج ختم ہو ئی ،مقامی حکام نے اعلی حکام کے ہدایت پر عمل درامد کر تے ہو ئے بارڈرپر لاؤڈ سپیکر کے ذریعے اعلانات بھی کئے اور پینافلیکس بھی آویزاں کئے گئے کہ بروز منگل کے بعد سفری دستاوزات کے بغیر آنے جانے پر مکمل پابندی ہو گی جس کی سیکورٹی کے لئے اضافی فورسز کو پاک افغان بارڈر پر تعینات کیا گیا ۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز پاک افغان بارڈر طورخم پر پاکستان اور افغانستان بارڈر حکام کے درمیان ایک فلیگ میٹنگ بھی ہوئی تھی جس میں افغان حکام نے پاکستانی حکام سے درخواست کی تھی کہ رمضان المبارک اور عید کے دوران افغانیوں کے ساتھ نرمی کی جائیں۔

پشاور(خصوصی رپورٹ)پشاور کنٹونمنٹ میں داخل ہونے کیلئے آرمی کی چیک پوسٹ پر شناخت ظاہرکرنے کے مطالبے پر افغان قونصل جنرل عبداللہ وحید پویان نے افغان قونصلیٹ احتجاجاً سیل کر دیا۔تفصیلات کے مطابق قونصل جنرل عبداللہ وحید پویان سے فوجی فاونڈ یشن ہسپتال کنٹونمنٹ پشاور میں داخل ہوتے ہوئے شناخت ظاہر کرنے کا مطالبہ کیا گیا جس پر انہوں نے احتجاج کیا۔یہاں پر یہ بات بتانی ضروری ہے کہ یکم جون سے طور خم بارڈر پر افغانیوں کو پاکستان میں داخلے کے لئے ویزہ اور پاسپورٹ دکھانا ضروری قرار دیا گیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ افغان قونصل جنرل نے جان بوجھ کرپاکستان پر دباو ڈالنے کے لیے یہ خود ساختہ احتجاج ریکارڈ کروایاہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...