رشتہ کے تنازعہ پر جلائی گئی لڑکی دم توڑ گئی

رشتہ کے تنازعہ پر جلائی گئی لڑکی دم توڑ گئی
رشتہ کے تنازعہ پر جلائی گئی لڑکی دم توڑ گئی

  


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) مری میں رشتے کے تنازعہ پر جلائی گئی لڑکی دم توڑ گئی ۔متاثرہ لڑکی کو گزشتہ روز پمز ہسپتال میں داخل کرایا گیا تھا جہاں وہ انتقال کر گئی جبکہ لڑکی کے رشتہ داروں نے ہسپتال عملہ کے رویئے کے خلاف ہسپتال کے باہر شدید احتجاج  کیا۔

تفصیلات کے مطابق مری میں رشتہ کے تنازعہ پر جلائی جانے والی لڑکی ماریہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے پمز ہسپتال میں دم توڑ گئی۔لڑکی کو گزشتہ روز آگ لگائی گئی تھی جس کی وجہ سے اس کا جسم کا 85 فیصد سے زائد حصہ جل گیاتھا۔ماریہ کے والد کا کہنا ہے کہ ملزم ناصر شوکت کی جانب س رشتہ کا پیغام آیا تھا جس پر معذرت کی تو ملزم ناصر شوکت نے اپنے دوستوں کے ساتھ مل کر ماریہ کو زندہ جلا دیا۔

انتقال سے قبل پولیس کو ریکارڈ کرائے گئے بیان میں مرھومہ کا کہنا تھا کہ والدین فوتگی پر گئے ہوئے تھے جبکہ گھر میں صرف میں اور میری بہن تھیں اس دوران ماسٹر شوکت،ارشد اور رفعت کے ساتھ دو تین نامعلوم لوگ ہمارے گھر گھس آئے اورمجھے شوکت  نے کہا کہ تم میرے بیٹے کے پیچھے پڑی ہو آج میں تمہیں زندہ جلا دوں گا ، اس کے بعد اس نے مٹی کا تیل چھڑکا اور آگ لگا دی جس کے بعد میں چیختی چلاتی رہی لیکن کوئی مدد کو نہ آیا جبکہ ملزمان آگ لگا کر موقع سے بھاگ گئے۔واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے  تفصیلات طلب کرتے ہوئے ملزموں کے خلاف فوری کارروائی عمل میں لانے کا حکم دیدیا۔

 جب کہ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی مقامی افراد نے متاثرہ لڑکی کو انتہائی تشویشناک حالت میں پمزہسپتال منتقل کیاتھا۔ ڈاکٹروں نے اس کی حالت کو انتہائی تشویشناک قراردیا تھا۔ 

دوسری جانب پولیس نے زیر دفعہ 149،147اور324کے تحت مقدمہ درج کر کے تین ملزم گرفتار کرلیئے ہیں۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں