دنیا میں جدید غلامی کے رجحان میں اضافہ، بھارت سرفہرست، پاکستان کا تیسرا نمبر

دنیا میں جدید غلامی کے رجحان میں اضافہ، بھارت سرفہرست، پاکستان کا تیسرا نمبر
دنیا میں جدید غلامی کے رجحان میں اضافہ، بھارت سرفہرست، پاکستان کا تیسرا نمبر

  


نئی دہلی (ویب ڈیسک) حقوق انسانی کے تحفظ کے لئے سرگرم تنظیم کے ایک نئی تحقیق میں کہا گیا ہے کہ دنیا میں اس وقت ساڑھے چار کروڑ لوگ جدید دور کے غلاموں کی حیثیت سے کام کررہے ہیں، غلامی میں جکڑے ہوئے سب سے زیادہ افراد بھارت میں ہیں، فہرست میں پاکستان تیسرے نمبر پر ہے۔ واک فری فاﺅنڈیشن کے سروے میں کہا گیا ہے کہ دنیا میں اس وقت ساڑھے چار کروڑ افراد جدید دور کے غلام کی حیثیت سے کام کررہے ہیں۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

تنظیم کے مطابق جدید دور کے غلام کی اصطلاح خواتین اور بچوں سمیت ان افراد کے لئے استعمال کی جاتی ہے جن سے جبری مشقت لی جاتی ہے یا جنسی مقاصد کے لئے زبردستی استعمال کیا جاتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق اس قسم کی غلامی میں پھنسے ہوئے سب سے زیادہ افراد ایشیا میں ہیں جبکہ اس فہرست کے پہلے پانچ ممالک بھی اسی خطے سے ہیں۔ اس فہرست میں بھارت سب سے آگے ہے جہاں ایک کروڑ 83 لاکھ افراد غلامی کی زنجیروں میں جکڑے ہوئے ہیں۔ چین 30 لاکھ افراد کے ساتھ دوسرے نمبر پر جبکہ پاکستان تیسرے نمبر پر ہے جہاں 20 لاکھ سے زائد افراد غلامی کا شکار ہیں۔

مزید : بین الاقوامی