یو بی ایل فنڈ منیجرز لمیٹیڈ کا مئی اور جون کے دوران چھ نئے سرمایہ کاری سینٹرز کے آغاز کا اعلان

یو بی ایل فنڈ منیجرز لمیٹیڈ کا مئی اور جون کے دوران چھ نئے سرمایہ کاری سینٹرز ...

  

اسلام آباد (اے پی پی) یو بی ایل فنڈ منیجرز کے چیف ایگزیکٹو آفیسر یاسر قادری نے کہا کہ ہم اپنے صارفین کیلئے سرمایہ کاری کو لچکدار اور آسان بنانے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔انہوں نے پاکستان بھر میں مئی اور جون 2017 ء کے دوران چھ نئے سرمایہ کاری کے سینٹرز کے آغاز کے ساتھ یو بی ایل فنڈ منیجرز لمیٹیڈ اپنے وسیع نیٹ ورک میں توسیع کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ صارفین کو مزید سہولیات کے لیے پر عزم ہیں۔ اپنی رسائی اور صارفین میں اضافے کے مقصد کے ساتھ یو بی ایل فنڈز جہلم، راولپنڈی، پشاور اور فیصل آباد میں سرمایہ کاری کے سینٹرز کا افتتاح کرے گا جبکہ حیدرآباد میں ایک سینٹر کو دوسرے مقام پر منتقل کیا جائے گا۔ ان کے ساتھ ساتھ یو بی ایل فنڈ منیجرز کے اسلامی مصنوعات کے پورٹ فولیو میں شامل الامین فنڈز کے سرمایہ کاروں کیلئے خصوصی طور پر اسلام آباد اور گوجرانوالہ میں بھی انویسٹمنٹ سینٹرز بنائے جائیں گے۔سرمایہ کاری کے ان سینٹرز کا مقصد سرمایہ کاروں کی آسانی اور ان تک آسان رسائی ہے اور اس سے پاکستان کی میوچل فنڈز کی صنعت مزید ترقی کرے گی۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے یو بی ایل فنڈ منیجرز کے چیف ایگزیکٹو آفیسر یاسر قادری نے کہا کہ ہم اپنے صارفین کیلئے سرمایہ کاری کو لچکدار اور آسان بنانے کی کوششوں میں مستقل مصروف عمل ہیں اور اس سلسلے میں مستقل کام کرتے رہیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہمارے اسمارٹ سیونگز سینٹرز صارفین کو یہ موقع فراہم کریں گے کہ وہ سرمایہ کاروں کے مشیروں پر مشتمل ہماری ماہر ٹیم سے اپنے مالی اہداف پر تبادلہ خیال کریں۔ کلائنٹ کے پورٹ فولیو اور مالی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے ہمارے مشیر ان کی رہنمائی کریں گے کہ کس جگہ سرمایہ کاری کرنا ان کیلئے بہترین ہے تاکہ ان کے مستقبل کے اہداف کے حصول میں ان کی مدد کر سکیں۔سرمایہ کاری کے نئے سینٹرز کے آغاز کے ساتھ ہی یو بی ایل فنڈز کی ملک بھر میں کُل 16 شاخیں جائے گی جبکہ الامین کی شاخوں کی تعداد چھ ہو جائے گی۔ یو بی ایل فنڈز کے موجودہ انویسٹمنٹ سینٹرز کراچی، لاہور، اسلام آباد، فیصل آباد، حیدرآباد، ملتان، پشاور، راولپنڈی اور ایبٹ آباد میں واقع ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ بہاولپور، میانوالی، سرگودھا، جہلم، سکھر، واہ کینٹ، اٹک اور دیگر کئی شہروں میں متبادل ڈسٹری بیوشن چینلز بھی موجود ہیں۔

مزید :

کامرس -