خاتون رپورٹر کا زبردستی بوسہ لینے پر ٹینس کھلاڑی پر پابندی

خاتون رپورٹر کا زبردستی بوسہ لینے پر ٹینس کھلاڑی پر پابندی

  

پیرس(آئی این پی)فرینچ اوپن کی انتظامیہ نے ٹینس کے کھلاڑی میکزیم ہمو کو خواتین صحافی کا بوسہ لینے کی کوشش کرنے پر ان پر پابندی عائد کر دی ہے۔ٹینس کے کھلاڑی میکزیم ہمو کو ایک خواتین صحافی کا بوسہ لینے کی کوشش کرنے کے بعد تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب 21 سالہ ہمو نے فرنچ اوپن کے دوران ایک لائیو انٹرویو کے دوران رپورٹر مالے تھومس کو گردن سے پکڑ کر بوسہ دینے کی کوشش کی۔میکزیم ہمو کا یہ انٹرویو اس وقت لیا جارہا تھا جب وہ پہلے راؤنڈ میں اپنا میچ ہارنے کے بعد فرنچ اوپن سے باہر ہوگئے۔ہمو نے ابھی تک ان کے رویے کے خلاف آنے والی شکایات کا عوامی سطح پر جواب نہیں دیا۔

اس واقعے کے بعد سوشل میڈیا پر بہت سے لوگوں نے افسوس اور غصے کا اظہار کیا ہے۔فرانسیسی سیاست دان سیسل ڈفلت نے ٹوئٹر پر لکھا 'اس نے ذبردستی اسے کِس کیا۔ اس نے بچنے کی کوشش کی لیکن اس نے اسے گلے سے پکڑا اور اس پر سب ہنسنا شروع ہوگئے۔ اگر میں لائیو ہوتی تو میں اسے مکا مارتی۔خواتین رپورٹر کو ہراساں کرنے کے الزامات کا یہ پہلا واقعہ نہیں اس سے قبل ویسٹ انڈیز کے کھلاڑی کرس گیل پر ایک براہ راست انٹرویو کے دوران ٹی وی رپورٹر کو ڈیٹ پر چلنے کے لیے کہنے پر 10 ہزار آسٹریلوی ڈالر کا جرمانہ کیا گیا تھا۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -