پینٹاگون کا ممکنہ بیلسٹک میزائل حملے سے دفاع کا کامیاب تجربہ

پینٹاگون کا ممکنہ بیلسٹک میزائل حملے سے دفاع کا کامیاب تجربہ

  

واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) امریکی وزارت دفاع نے بحر الکاہل میں ممکنہ میزائل حملے سے دفاع کا کامیاب تجربہ کیا ہے، شمالی کوریا اس خطے میں انٹر کانٹی نینٹل بیلسٹک میزائل فائر سکتا ہے جس میں وہ ایٹمی اسلحہ نصب کرنے کی تیاری کررہا ہے، ابھی وہ ایٹمی صلاحیت حاصل کرنے کے قابل نہیں لیکن اطلاعات کے مطابق وہ اس سلسلے میں پیش رفت کررہا ہے، اس دوران پینٹاگون میزائل حملوں سے دفاع کیلئے اپنے نظام کو مضبوط بنانے پر کام کررہا ہے، اس سلسلے میں منگل کے روز یہ جو تجربہ کیا ہے اس پر 24 کروڑ 40 لاکھ ڈالر کی لاگت آئی ہے، اس تجربے میں دشمن کے ایک نقلی جنگی ہتھیار کو کامیابی سے نشانہ بنا کر تباہ کیا گیا ہے۔ پینٹاگون کی دفاعی نظام تیار کرنیوالی ایجنسی کے انچا ر ج وائس ایڈ مرل حجم سرنج نے اس تجربے کے بعد اسے ایک نا قابل یقین کامیابی قرار دیا ہے جس میں پچھلے کئی سالوں سے ناکامی ہو رہی تھی، تاہم انہوں نے خبر دار کیا کہ ممکن ہے دشمن کے حقیقی میزائل کو اتنی کامیابی سے نشانہ نہ بنایا جاسکے اس لئے اسے مزید موثر بنانے کا سلسلہ جاری رکھا جائے گا۔پینٹاگون نے اس تجربے کی جو تفصیل بیان کی ہے اس کے مطابق بحر الکاہل کے اندر ’’مارشل آئی لینڈز‘‘ میں ریگن ٹیسٹ کائٹ سے ایک نقلی میزائل چھوڑا گیا اور امریکہ کے مغربی ساحل پر کیلیفورنیا کی ریاست میں وینڈنبرگ کے فضائی اڈے سے سنسر نظام کے ذریعے ٹارگٹ کو ٹریک کیا گیا اور پھر ٹریکنگ سسٹم کی رہنمائی میں ٹارگٹ کا پیچھا کرکے اسے تباہ کرنے کیلئے میزائل یا Interceptor چھوڑا گیا اور کامیاب نشانہ لگا دیا گیا۔

مزید :

علاقائی -