جرمنی میں خودکش حملے کی منصوبہ بندی کرنے والاشامی نوجوان گرفتار

جرمنی میں خودکش حملے کی منصوبہ بندی کرنے والاشامی نوجوان گرفتار

  

برلن(این این آئی)جرمن پولیس نے خودکش حملے کی منصوبہ بندی کرنے کے شْبے میں ایک سترہ سالہ شامی نوجوان کو گرفتار کر لیا ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق حکام نے بتایاکہ مبینہ ملزم دارالحکومت برلن میں حملہ کرنا چاہتا تھا اور اس حوالے سے اپنی والدہ کو آگاہ کر چکا تھا۔پولیس کے مطابق مشتبہ حملہ آور کو جرمن چانسلر انگیلا میرکل کی ریاست برانڈنبرگ میں گرفتار کیا گیا ہے۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق شامی لڑکے نے اپنے منصوبے کے حوالے سے اپنی والدہ کو ایک پیغام بھی ارسال کیا تھا۔ جرمن سکیورٹی حکام ملک میں دہشت گردانہ حملوں کے امکان کے حوالے سے بارہا خبردار کر چکے ہیں۔ریاستی وزیر داخلہ کارل ہائنس شروئٹر کا اس حوالے سے مزید معلومات فراہم کرتے ہوئے کہنا تھا کہ مشتبہ ملزم نے اپنی والدہ کو لکھا تھاکہ میں نے جہاد میں شمولیت اختیار کر لی ہے۔ دوسری جانب پولیس کا کہنا تھا کہ وہ اس حوالے سے تحقیقات جاری رکھے ہوئے ہیں اور انہیں خودکش حملے کے حوالے سے ’’ٹھوس ثبوت‘‘ ابھی تک نہیں مل سکے ہیں۔ریاستی وزیر داخلہ کے مطابق سترہ سالہ شامی لڑکا سن 2015 میں ایک مہاجر کے طور پر جرمنی پہنچا تھا اور اس وقت اس کے خاندان کا کوئی بھی فرد اس کے ہمراہ نہیں تھا۔ مشتبہ ملزم گزشتہ ایک برس سے اْوکرمارک نامی علاقے کے ایک مہاجر کیمپ میں رہائش پذیر تھا۔

مزید :

عالمی منظر -