صوابی میں اندھے قتل کا سراغ لگا لیا گیا‘ 2 گرفتار

صوابی میں اندھے قتل کا سراغ لگا لیا گیا‘ 2 گرفتار

  

صوابی ( بیوررپورٹ) چھوٹا لاہور پولیس نے اندھے قتل کا سراغ لگا کر دو افراد کو ڈرامائی انداز میں گرفتار کر لیا۔ قاتل مقتول کا بیٹا اور اس کی بیوی کا آشنا نکلے۔ ڈی پی او آفس سے جاری پریس ریلیز کے مطابق چار مئی کو اطلاع ملنے پر چھوٹا لاہور پولیس نے لاہور بند سور کے مقام سے ایک قتل شدہ لاش بر آمدکر لی۔اور مقتول کی والدہ کی رپورٹ پر نامعلوم ملزمان کے خلاف ایف آئی آر درج کر کے تفتیش شروع کر دی۔ایس ایچ او تھانہ لاہور نور الا مین خان اور تفتیشی آفیسر سعدی خان نے جدید خطوط پراس اندھے قتل کو ٹریس کر لیا۔ مقتول آفسر شاہ کے قتل میں ملوث ان کے بیٹے جواد علی اور بیوی کی مبینہ آشناء صاحبزادہ سکنہ سرخ ڈھیری کو آلہ قتل پستول سمیت گرفتار کر لیا۔ڈی ایس پی سرکل چھوٹا لاہور پشم گل خان ،ایس ایچ او لاہور نورآلامین خان ،تفتیشی آفیسر سعدی خان اور ان کے ٹیم نے اپنی پیشہ وارانہ صلاحیتوں کی بدولت جدید خطوط کو بروئے کار لاتے ہوئے اس اندھے قتل کو ٹریس کیا دوران تفتیش معلوم ہوا کہ مقتول کو زوجہ ش مسماۃ رقیہ ساکن لاہور حال کھنڈہ کی ایماء پر ملزم جواد علی جو اس کا بیٹا ہے اور صاحبزادہ ولد خانزادہ ساکن سرخ ڈھیری جو مسماۃ رقیہ کا اشنا ہے نے قتل کرکے نعش کو کو بند سور نہر پانی میں دھکیلا تھا مسماۃ رقیہ نے عدالت میں باقاعدہ جرم قبول کر لی انہوں نے بتایا کہ اسکی ایماء پرخاوند اش آفسر شاہ کو صاحبزادہ اور جواد علی نے قتل کرکے نہر پانی میں پھینکا تھا۔ ایس ایچ او نورآمین خان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ اس سے قبل آٹھ اکتوبر2016 کو ملزم صاحبزادہ نے مقتول کی سولہ سالہ بیٹی مسماۃ (الف ) کے ساتھ زبردستی سے زناکرکے تقریباً6,7مہینے جیل کاٹ چکے ہیں ملزم صاحبزادہ نے گھر کے فون پر کال کرکے کہا کہ میری بیوی بیمار ہے میرے ساتھ گھر چلے موٹر سائیکل پر سوار کرکے جائے وقوعہ پر میرے ساتھ زبردستی سے زنا حرام کی ،میڈیکل رپورٹ کے مطابق چھوٹا لاہور پولیس نے ملزم صاحبزادہ کو گرفتار کرکے قید گزاری ،گزشتہ دن ان کی رہانی کرنے کے بعد یہ دوسرا اقدام ہے کہ آفسر شاہ کو قتل کیا۔چھوٹا لاہور پولیس نے تینوں ملزمان کے خلاف ایف آئی آر درج کر کے تفتیش شروع کر دی ہے #

مزید :

پشاورصفحہ آخر -