سٹالز کی کمی غیر معیاری اشیاء کی مہنگے داموں فروخت، رمضان بازار فلاپ

سٹالز کی کمی غیر معیاری اشیاء کی مہنگے داموں فروخت، رمضان بازار فلاپ

  

.میلسی ‘ خانیوال ‘ حیدر آباد تھل ‘ فتح پور ( نمائندگان ) سٹالوں کی کمی اور غیر معیاری اشیاء مہنگے داموں فروخت کے باعث رمضان بازار فلاپ ہوگئے ‘ خریدار غائب ہوگئے ‘ اس سلسلے میں میلسی سے نامہ نگار کے مطابق رمضان بازار میلسی ،انتظامیہ کی نا اہلی کی وجہ سے ناکامی کا شکار ہو گیا۔ تفصیل کے مطابق رمضان بازار میلسی میں انتظامیہ کی غفلت منہ بول کر ظاہر ہورہی ہے۔ جہاں سٹالوں کی شدید کمی ہے وہا ں ان پر غیر معیاری اشیاء کو فروخت کیا جا رہا ہے۔ محمد سلیم، محمد فیصل، ظہیر احمد، محمد قاسم ، اللہ وسایا، محمد اقبال، زرینہ بی بی ، شہناز مائی ، خالدہ بیگم سمیت دیگر شہریوں نے رمضان بازار میں صحافیوں کو بتایا کہ بحکومت کی طرف سے اربوں روپے ریلیف کا اعلان کیا گیا مگر یہاں ریلیف کا نام تک موجود نہیں ہے۔ دوم فروٹ فروخت کیا جا رہا ہے جبکہ نرخ اول کے وصول کئے جا رہے ہیں ۔ اسی طرح مشروبات اور سبزیاں بھی غیر معیاری ہیں۔ آٹا اورچینی من پسند لوگوں کو زائد مقدار میں مہیا کی جا رہی ہے جبکہ عام شہری کے لئے مخصوص مقدار میسر ہے ۔ یہ رمضان بازار کے نام پر شہریوں کو دھوکہ دینے کے مترادف ہے۔ خانیوال سے بیورو نیوز کے مطابق حکو مت نے عام لو گوں کی سہولت کیلئے سستی اور معیا ری اشیاء خوردو نو ش کے لئے رمضان بازارو ں اور یو ٹیلٹی سٹور ز کوبڑے پیما نے پر سبسڈی دی مگر یہ سہولت عام آدمی تک پہنچنا تو در کنار بلکہ اشیاء بازار کے مقابلے میں مہنگی ہیں۔ یو ٹیلٹی سٹور پر چینی 55رو پے فروخت کی جا رہی ہے جبکہ عام بازار میں چینی 52/53روپے فی کلو دستیاب ہے ، اسی طر ح یو ٹیلٹی سٹور پر انتہائی غیر معیا ری کھجو ر 140روپے کلو فرو خت ہو رہی ہے جبکہ وہ کھجو ر عام بازار میں 80سے 100روپے کلو فرو خت ہو رہی ہے جبکہ وہ کھجو ر عام بازار میں 80سے 100روپے کلو تک فرو خت ہو رہی ہے ۔ اسی طر ح رمضان بازار میں کریانہ دکا نو ں پر چینی 52روپے ہے اور جو سر کا ری سبسڈی میں بلدیہ کے سٹال سے فرو خت کی جا رہی ہے وہ 50روپے ہے مگر وہاں زیادہ دیر چینی دستیاب نہیں ہو تی ، غیر معیا ری گھی ، چاول اور دیگراشیا ء کی فرو خت جاری ہے ، سرکا ری سبسڈی والا گھی کا سٹا ل اکثر بند رہتا ہے ۔ رمضان بازار میں سرکاری سبسڈی پر چلنے والے سبزی اور پھل کے سٹال پر بھی محدو د چیزیں دستیا ب ہیں ، مونگ کی دا ل نہیں ملتی با قی اشیاء جلد ختم ہو جا تی ہیں۔ شہریو ں محمداقبا ل ، رمضان ، چوہدری اسد ، شیخ ابرار، ملک ذیشا ن اور دیگر کے مطابق رمضان بازار کے قیا م پر اخرا جات بہت زیادہ اور لو گو ں کو ملنے والی سہو لت نہ ہو نے کے برابر ہے ۔ حیدر آباد تھل سے نمائندہ پاکستان کے مطابق عام مارکیٹ میں ٹماٹر 20سے 25روپے رمضان بازار میں32روپے فی کلو حیدرآبادتھل رمضان بازار مکمل طور پر فلاپ عوام کو ریلیف دینے کی بجائے الٹا چمڑی اتاری جا رہی ہے عام مارکیٹ میں سبزیوں اور فروٹ کے ریٹ کم ہیں اور رمضان بازار میں لگائے گے سٹال ان کے ریٹ زیادہ ہیں عوام سراپا احتجاج رمضان بازار لگا نا کا مقصد عوام کو ریلیف اشیاء سستی دینا ہے لیکن یہاں تو الٹی گنتی شروع ہے ریلیف دینے کی بجائے زیادہ ریٹ لئے جارہے ہیں خاص طور پر مارکیٹ کمیٹی کی اشیاء ان کا بازار میں ریٹ کم ہے اور رمضان بازار میں ریٹ زیادہ ہے اور ان کو سبسڈی بھی دی جارہی، عوام نے سوچنا شرو ع کر دیا ہے کہ مارکیٹ کمیٹی والوں کو سبسڈی کیوں دی جارہی ہے۔ فتح پور سے نامہ نگار کے مطابق سستا رمضان بازار مہنگا ترین بازار بن گیا ،ناقص اشیا ء مارکیٹ ریٹ پر فروخت ،عوامی دلچسپی سے محروم ،انتظامیہ و عوامی نمائندے فوٹو سیشن تک محدود،عوام کو ریلیف دینے کی بجائے تشہیر اور فرضی دوروں سے کاروائیاں مکمل ،رمضان بازار میں دکاندار گاہکوں کی راہ تکتے رہے ،رمضان بازار سروس روڈ کی بجائے میونسپل کمیٹی کی حدود میں ہونے کی وجہ سے بری طرح فلاپ ہوگیا ،DC لیہ کا سستارمضان بازار فتح پور کا دورہ،اشیاء کا معیار، وزن ،ریٹ اور شکایات رجسٹر چیک کیا DC لیہ سید واجد علی شاہ سستے رمضان بازار میں نا قص اشیاء کی فروخت، ریٹ زائد ہونے پر برہم ہو تے ہوئے AC کروڑ کو جھاڑ پلا دی،سستے رمضان بازار کا انعقادحکومت کا شہریوں کو براہ راست ریلیف فراہم کرنا ہے ان خیالات کا اظہار DC لیہ سید واجد علی شاہ نے عملہ سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے AC کروڑ تنویر یزداں کو ہدایات جاری کیں کی رمضان بازار میں معیار ،وزن اور ریٹ پر کوئی سمجھوتا نہیں ہوگا ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -