سرگودھا یونیورسٹی کا پروفیسر اپنی شاگرد کیساتھ قابل اعتراض حالت میں پکڑا گیا

سرگودھا یونیورسٹی کا پروفیسر اپنی شاگرد کیساتھ قابل اعتراض حالت میں پکڑا ...
سرگودھا یونیورسٹی کا پروفیسر اپنی شاگرد کیساتھ قابل اعتراض حالت میں پکڑا گیا

  

سرگودھا (ویب ڈیسک) یونیورسٹی آف سرگودھا کا پروفیسر طارق حبیب اپنی سٹوڈنٹ کے ساتھ زبردستی کرتے قابل اعتراض حالت میں گرفتار، لڑکی کی منت سماجت اور پروفیسر طارق حبیب کو مک مکا پر چھوڑ دیا گیا، تفصیلات کے مطابق اردو ڈیپارٹمنٹ میں تعینات لیکچرار طارق حبیب اپنی سٹوڈنٹ کو تھیسز میں خصوصی مدد کیلئے 24/05/17 کو اپنے ساتھ ڈھڈی کالونی واقع مکان میں لے گیا جہاں پہنچ کر پروفیسر طارق حبیب نے لڑکی کے ساتھ چھیڑ چھاڑ شروع کر دی اور امتحان میں اضافی نمبرز دینے کا لالچ دے کر تعاون کرنے کا کہا۔

روزنامہ خبریں نے دعویٰ کیا کہ لڑکی کے انکار پر اسے فیل کرنے کی دھمکیاں دیتے ہوئے بلیک میل کیا اور پھر لڑکی کے ساتھ زیادتی شروع کر دی لڑکی کے چیخنے پر گزرتے ہوئے سپیشل برانچ اور سیٹلائٹ ٹاﺅن تھانہ کے اہلکار نے فوری طور پر مداخلت کی اور پروفیسر طارق حبیب کو قابل اعتراض حالت میں زبردستی کرتے ہوئے گرفتار کر لیا اور لڑکی کو طارق حبیب کے شر سے بچایا ، لڑکی نے اپنی بدنامی اور مستقبل کے خوف کے پیش نظر اہلکاروں سے منت سماجت کی جبکہ پروفیسر طارق حبیب نے اپنا تعارف ملک کے معروف شاعر و ادیب کے طور پر بھی کروایا۔ اہلکاروں نے مک مکا کر کے لڑکی کو موقع سے جانے کا کہا ۔

اخبار کے مطابق یونیورسٹی آف سرگودھا میں اکثر واقعات زنا اور زبردستی کے رپورٹ ہوئے ہیں اور قابل افسوس امر یہ ہے کہ یونیورسٹی کے اساتذہ بھی اس میں ملوث پائے گئے ہیں جس کی تازہ مثال پروفیسر طارق حبیب کا موقع پر گرفتار ہونا ہے ۔

مزید :

جرم و انصاف -