اگر الیکشن میں ڈونلڈ ٹرمپ امیدوار ہوں تو کتنے فیصد سعودی انہیں ووٹ دیںگے؟ تازہ سروے میں انتہائی حیران کن نتیجہ سامنے آگیا، سعودی شہریوں نے ایسا فیصلہ سنادیا کہ پوری دنیا کے مسلمانوں کے منہ کھلے کے کھلے رہ گئے

اگر الیکشن میں ڈونلڈ ٹرمپ امیدوار ہوں تو کتنے فیصد سعودی انہیں ووٹ دیںگے؟ ...
اگر الیکشن میں ڈونلڈ ٹرمپ امیدوار ہوں تو کتنے فیصد سعودی انہیں ووٹ دیںگے؟ تازہ سروے میں انتہائی حیران کن نتیجہ سامنے آگیا، سعودی شہریوں نے ایسا فیصلہ سنادیا کہ پوری دنیا کے مسلمانوں کے منہ کھلے کے کھلے رہ گئے

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) مسلم ممالک میں امریکا اور اس کے رہنماﺅں کی مقبولیت ہمیشہ نہ ہونے کے برابر رہی ہے لیکن امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حالیہ دورہ سعودی عرب کے بعد سعودی عوام میں ان کی مقبولیت میں حیران کن اضافہ ہو گیا ہے۔

عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق تحقیقاتی ادارے YouGov کے ایک سروے میں شامل 507 سعودی شہریوں میں سے تقریباً نصف کا کہنا تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے دورہ سعودی عرب سے دونوں ممالک کے تعلقات میں بہتری آئے گی۔ امریکی صدر کے دورہ سعودی عرب کو دونوں ممالک کے لئے مفید قرار دیا گیا اور اسے دونوں ممالک کے تعلقات کی بہتری کیلئے ایک اہم قدم کے طور پر دیکھا گیا۔

صدارت سنبھالنے کے بعد یہ ان کا کسی بھی بیرونی ملک کا پہلا دورہ تھا۔ سروے میں شامل تقریباً ایک چوتھائی افراد کا کہ کہنا تھا کہ امریکی صدر کے دورہ سعودی کے نتیجے میں ان کا تاثر بہتر ہوا ہے۔ تقریبا ً 38 فیصد کا کہنا تھا کہ اس دورے سے کوئی خاص فرق نہیں پڑا۔ صدر کے ٹرمپ کے بارے میں منفی رائے کا اظہار کرنے والے صرف 10 فیصد تھے۔

شاہ سلمان کے ٹوئٹس ٹرمپ سے زیادہ ری ٹوئٹس ہوتے ہیں:رپورٹ

امریکی انتخابات سے قبل سعودی عرب میں کیے گئے ایک سروے میں سعودی عوام نے ڈونلڈ ٹرمپ کے بارے میں انتہائی منفی رائے کا اظہار کیا تھا۔ سعودی عوام میں سے صرف 8 فیصد کا کہنا تھا کہ اگر انہیں موقع ملے تو وہ ٹرمپ کوصدر دیکھنا چاہیں گے، جبکہ 41 فیصد ہیلری کلنٹن کو صدر دیکھنا چاہتے تھے۔ تازہ ترین سروے، جو کہ 25 سے 29 مئی کے دوران کیا گیا، کے نتائج اس لحاظ سے حیران کن تھے کہ اب 57 فیصد سعودی شہریوں کا کہنا تھا کہ اگر انہیں امریکی الیکشن میں ووٹ ڈالنے کی اجازت وہ تو وہ ڈونلڈ ٹرمپ کو منتخب کریں گے۔

عرب نیوز کے ایڈیٹر انچیف فیصل عباس کا کہنا تھا کہ یہ نتائج ظاہر کرتے ہیں کہ الفاظ کی نسبت عمل کی اہمیت زیادہ ہوتی ہے۔ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی انتخابی مہم کے دوران ہمیشہ سخت الفاظ استعمال کیے لیکن اب مشرق وسطیٰ کے بارے میں ان کا عملی رویہ مثبت ہے جس کی وجہ سے مشرق وسطی کے عوام کی رائے بھی ان کے بارے میں بہتر ہو رہی ہے۔ خصوصاً سعودی دورے کے دوران کی جانے والی ان کی تقریر کی وجہ سے ان کا تاثر بہت بہتر ہوا ہے۔ اس تقریر میں انہوں نے ایران کیلئے انتہائی سخت زبان استعمال کی جبکہ سعودی عرب کیلئے بھرپور حمایت کا اعلان کیا تھا۔

مزید :

عرب دنیا -