کابل دھماکہ، جرمنی نے افغان مہاجرین کی ڈی پورٹیشن روک دی

کابل دھماکہ، جرمنی نے افغان مہاجرین کی ڈی پورٹیشن روک دی
کابل دھماکہ، جرمنی نے افغان مہاجرین کی ڈی پورٹیشن روک دی

  

برلن (ڈیلی پاکستان آن لائن) جرمن چانسلر آنگلہ مرکل کے حکم پر کابل میں ہونے والے ہولناک دھماکے کے بعد افغان مہاجرین کی ڈی پورٹیشن کا عمل روک دیا گیاہے۔

جرمن میڈیا کے مطابق جمعرات کو آنگلہ مرکل نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ افغانستان میں بگڑتی ہوئی سیکیورٹی صورتحال کے پیش نظر افغان مہاجرین کی ڈی پورٹیشن کا عمل عارضی طور پر روک دیا گیا ہے۔ یہ تعطل جولائی تک جاری رہے گا لیکن اس دوران جرائم پیشہ افراد اور جرمنی کی سلامتی کیلئے خطرہ بننے والے افراد کو واپس بھیجا جاتا رہے گا۔

افغان دارالحکومت کابل میں غیر ملکی سفارتحانے کے قریب خودکش حملہ ،90افرادجاں بحق ، پاکستان کے سفارتی عملے سمیت300 زخمی

کابل میں بدھ کے روز ہونے والے دھماکے میں 90 سے زائد افراد ہلاک ہوگئے تھے جس کے بعد جرمنی سے افغان مہاجرین کے جہاز کی روانگی روک دی گئی ۔ حکام کہتے ہیں کہ اس جہاز کے مسافروں کو دوبارہ کسی بھی وقت بھیجا جائے گا۔

کابل دھماکہ،پاکستان کے دفاعی اتاشی کے گھر کو بھی نقصان پہنچا،اہلکار معمولی زخمی

واضح رہے کہ افغان دارالحکومت کابل میں بدھ کے روز جرمن سفارتخانے کے نزدیک دھماکہ ہواتھا ۔ افغان حکام نے تحقیقات مکمل ہونے سے پہلے ہی اپنے آقا بھارت کی ایما پر اس حملے کا الزام فوری طور پر پاکستان پر لگادیا تھا۔ پاکستان کے صحافتی حلقوں کا کہنا ہے کہ یہ دھماکہ جرمنی سے افغان مہاجرین کی ڈی پورٹیشن کا عمل رکوانے کیلئے جان بوجھ کر خود ہی کرایا گیا ہے جس کا اثر دھماکے کے ایک ہی روز بعد سامنے بھی آگیا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -اہم خبریں -