ملکی جمہوریت میں نئی تاریخ رقم ، پہلی مرتبہ دوسر ی حکومت آئینی مدت پوری کرکے ختم ، قومی اسمبلی تحلیل

ملکی جمہوریت میں نئی تاریخ رقم ، پہلی مرتبہ دوسر ی حکومت آئینی مدت پوری کرکے ...
ملکی جمہوریت میں نئی تاریخ رقم ، پہلی مرتبہ دوسر ی حکومت آئینی مدت پوری کرکے ختم ، قومی اسمبلی تحلیل

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان)وفاقی حکومت اور قومی اسمبلی کی آئینی مدت ختم ہونے کے ساتھ ہی مسلم لیگ ن کی حکومت اپنی 5 سالہ مدت پوری کرکے اختتام پذیر ہو گئی ہے،ملکی تاریخ میں یہ دوسری منتخب جمہوری حکومت ہے جس نے  اپنی آئینی مدت پوری کی ہے،اس سے قبل  پیپلز پارٹی کی حکومت نے 2013 میں اپنی 5 سال کی آئینی مدت پوری کی تھی ،قومی اسمبلی تحلیل ہوتے ساتھ ہی شاہد خاقان عباسی وزارت عظمیٰ سے سبکدوش جبکہ وفاقی کابینہ بھی ختم ہو گئی ہے ،وزارت پارلیمانی امور نے 31 مئی 2018 کی رات بارہ بجے 14ویں قومی اسمبلی کے تحلیل ہونے کا نوٹی فکیشن بھی جاری کردیا ہے ،حکومتی مدت پوری ہونے کے ساتھ ہی  پنجاب اور بلوچستان کی صوبائی اسمبلیاں بھی تحلیل ہو گئی ہیں جبکہ کے پی کے اور سندھ کی صوبائی اسمبلیاں اس سے قبل ہی تحلیل ہوچکی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق حکومت کی آئینی مدت ختم ہونے کے بعد مسلم لیگ ن کی حکومت تحلیل ہو گئی ہے اور  وزارت پارلیمانی امور نے قومی اسمبلی کےتحلیل ہونے کا نوٹی فکیشن آئین کے آرٹیکل 52 کے تحت جاری کر دیا ہے جبکہ نوٹی فکیشن کی کاپیاں وزیر اعظم آفس، ایوان صدر، چاروں صوبوں، الیکشن کمیشن آف پاکستان، قومی اسمبلی اور سینیٹ کو بھیج دی گئی ہیں۔حکومتی مدت پوری ہونے کے بعد نگران وزیر اعظم جسٹس (ر) ناصر الملک آج 11بجے اپنے عہدے کا حلف اٹھائیں گے،صدر مملکت ممنون حسین ان سے حلف لیں گے اور وہ  25 جولائی کو ہونے والے آئندہ عام انتخابات تک اپنی ذمہ دارایاں ادا کریں گےجبکہ صوبو ں کے وزرائے اعلیٰ نگران وزراۓ اعلیٰ کے تقرر تک اپنے عہدوں پر برقرار رہیں گے،سندھ میں نگران وزیر اعلیٰ کے لئے سابق چیف سیکرٹری فضل الرحمان کو نامزد کر دیا گیا ہے  جبکہ پنجاب میں نگران وزیر اعلیٰ کے نام پر ڈیڈ لاک برقرار ہے ،تحریک انصاف نے ڈاکٹر حسن عسکری اور سابق آئی جی کے پی کے ناصر درانی کے نام دیئے ہیں  جبکہ بلوچستان اور خیبر پختونخوامیں بھی حکومت اور اپوزیشن میں ڈیڈ لاک برقرار ہے،اگر ان تینوں صوبوں میں نگران وزرائے اعلیٰ کے ناموں پر اتفاق نہ ہوا تو معاملہ پارلیمانی کمیٹیوں میں بھیجا جائے گا ۔

واضح رہے کہ مسلم لیگ ن کی حکومت پاکستان کی تاریخ میں اپنے پانچ سال پورے کرنے والی دوسری جمہوری حکومت ہے جبکہ اس سے قبل  2013 میں آصف زرداری کی قیادت میں  پاکستان  پیپلز پارٹی کی حکومت نے ملکی تاریخ میں پہلی مرتبہ اپنی آئینی مدت پوری کرنے کا اعزاز حاصل کیا تھا تاہم پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن کی ان دونوں حکومتوں میں وزرائے اعظم اپنی آئینی  مدت پوری نہیں کر سکے تھے۔سابق وزیر اعظم شاہدخاقان عباسی نےبطور 18ویں منتخب وزیراعظم کی حیثیت سے 10 ماہ خدمات انجام دیں، ان سے پہلے اس عہدے پر نواز شریف نے 4 سال ایک ماہ اور 23 دن خدمات انجام دیں جنہیں اعلیٰ عدالت نے پاناما کیس میں نااہل قرار دیا تھا۔سابق وزیر اعظم نے اپنا آفس خالی کردیا ہے ،انہوں نے وزیر اعظم ہاؤس سے رخصت ہوتے وقت  اپنے سٹاف افسران و دیگر عملے سے الوداعی ملاقات  بھی کی جبکہ اس سے قبل انہوں نے وفاقی کابینہ کاآخری اجلاس بلا کر ارکان سے اظہار تشکر کرتے ہوئے کیا اپنی قیادت میں اراکین  کی بہتر کارکردگی کی کوششوں کو سراہا،مسلح افواج کی جانب سے آج(جمعہ کے روز) سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو گارڈ آف آنر پیش کیا جائے گا۔

مزید :

Breaking News -اہم خبریں -قومی -