پرائیویٹ سکولز ریگو لیٹری کا خلاف ورزیوں پر سکولوں کیخلاف کریک ڈاؤن کا آغاز

پرائیویٹ سکولز ریگو لیٹری کا خلاف ورزیوں پر سکولوں کیخلاف کریک ڈاؤن کا آغاز

  

پشاور( سٹاف رپورٹر) پرائیوٹ سکولز ریگولیٹری اتھارٹی کا احکامات کے خلاف ورزی کرنے والوں سکولوں کے خلاف کریک ڈاؤن کا آغاز، یونیورسٹی روڈ ، دلہ زاک روڈ، فقیر آباد میں متعدد سکولز بند کردائیے گئے ، کل بروز جمعہ مالکان کو طلب کرکے بھاری جرمانہ عائد کئے جائینگے، صوبے کے تمام ڈپٹی کمشنرز کو بھی خلاف ورزی کرنے والے سکولوں کی تفصیلات پی ایس آر اے کو مہیاکرنے کیلئے مراسلے جاری ، تمام اضلاع میں بیک وقت کارروائیوں کا آغاز کردیا گیا ہے کسی کے ساتھ کوئی رعایت نہیں برتی جائیگی ، منیجنگ ڈائریکٹر پرائیوٹ سکولز ریگولیٹری اتھارٹی سید ظفر علی شاہ تفصیلات کے مطابق پی ایس آر اے ایکٹ ،ہا ئیکورٹ احکامات اور طلبہ کو چھٹیاں نہ دینے والے سکولوں کے خلاف باقاعدہ کریک ڈاؤن کا آغاز کردیا گیا ہے پشاور میں خصوصی ٹیمیں تشکیل دید ی گئیں جس کی براہ راست سربراہی منیجنگ ڈائریکٹر پرائیوٹ سکولز ریگولیٹری اتھارٹی سید ظفر علی شاہ نے کی خصوصی ٹیموں نے والدین کی جانب سے شکایات پر نوٹس لیتے ہوئے یونیورسٹی روڈ ، دلہ زاک روڈ ، ورسک روڈ ، فقیر آباد اور دیگر علاقوں کادورہ کیا اس موقع پر خصوصی ٹیم نے فیس وصولی رجسٹرڈ چیک کئے اوراضافی فیس وصولی اور گرمیوں کی چھٹیاں نہ دینے والے سکولوں جن میں سٹی سکولز سینئر ، سٹی سکولز جونئیر ، بلوم فیلڈ سکولز ، پاکستان اکیڈمی سکول ،اقراء سکول کینال روڈ، پاک ترک سکول، المامہ میٹر سکول، رائسین سکول، گارمنٹس سکول ،اسمارٹ سکول کو بند کردئیے گئے جبکہ سکولز مالکان کو کل بروز جمعہ پی ایس آر اے آفس طلب کرلیاگیا جن پر احکامات پر عمل درآمد نہ کرنے ا ور خلاف ورزی کی پاداش میں بھاری جرمانے عائد کئے جائینگے اسکے علاوہ صوبے کے تمام ڈپٹی کمشنرز کو مراسلے ارسال کرکے خصوصی ٹیمیں تشکیل دینے اور پی ایس آر ایکٹ بچوں کو چھٹیاں نہ دینے والے اور ہائی کورٹ احکامات پر عمل درآمد نہ کرنے والے سکولوں کی تفصیلات 24 گھنٹوں کے اندر پی ایس آر اے کو ارسال کرنے کی ہدایات کی گئی ، اس ضمن میں منیجنگ ڈائریکٹر سید ظفر علی شاہ کا کہناتھاکہ پورے صوبے میں بیک وقت کریک ڈاؤن کا آغاز کردیا گیا ہے احکامات پر عمل درآمد نہ کرنے والے سکولوں کو بند کرکے بھاری جرمانے عائد کئے جائینگے ، لہذ اسکول انتظامیہ اپنا قبلہ درست کریں بصور ت دیگر سخت کارروائی کیلئے تیار رہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -