قیامت خیز گرمی ، بجلی کی آنکھ مچولی سے روزہ دار بلبلا اٹھے

قیامت خیز گرمی ، بجلی کی آنکھ مچولی سے روزہ دار بلبلا اٹھے

  

ملتان‘ خانیوال‘ کبیروالا‘ بٹہ کوٹ‘ اڈا کوٹ بہادر‘ کوٹ اسلام‘ میاں چنوں‘ وہاڑی(بقیہ نمبر41صفحہ12پر )

‘ میلسی‘ کوٹ ادو‘ راجن پور‘ داجل‘ ڈاہرانوالہ‘ (سٹاف رپورٹر‘ نمائندگان)شدید گرمی میں بجلی کی آنکھ مچولی‘ روزہ دار بے حال‘ جنوبی پنجاب میں درجہ حرارت 49ڈگری سینٹی گریڈ س متجاوز ہوگیا۔ تفصیل کے مطابق سورج آگ برسانے لگا‘ ملتان اور گردونواں میں درجہ حرارت 46ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا۔ ڈاکٹروں نے مشورہ دیا ہے کہ لو سے بچیں اور سر کو اچھی طرح ڈھانپ کر باہر نکلیں۔ خانیوال سے بیورونیوز کے مطابق خانیوال اور نواحی علاقوں میں گزشتہ روز گرمی کی شدت 45 سینٹی گریٹ رہا اور دوسری طرف بجلی نے بھی صبح ہوتے ہیں آنکھ مچولی شروع کر دی روزہ دار شدید گرمی اور تویل لوڈ شیڈنگ کے باعث پریشان دکھائی دیئے مساجد میں بھی بجلی کی عدم دستیابی کی وجہ سے نمازیوں کو بھی پریشانی کا سامنا کرنا پڑا ۔ کبیروالا‘بٹہ کوٹ‘اڈا کوٹ بہا درشے نا مہ نگار‘نمائندگان پاکستان کے مطابق گزشتہ صبح نو بجے کبیروالا اور مضا فاتی علاقوں میں بجلی کی ترسیل اچانک بند ہو جانے سے علاقہ میں نظام زندگی بری طرح مفلوج ہو گیا جبکہ بجلی کی بندش اور شدید حبس ،گر می کی وجہ سے متعدد افراد بیہوش ہو گئے ، وولٹیج میں اچانک کمی بیشی سے بھی متعدد علاقوں میں الیکٹرونکس اشیا ء جل گئیں، گر می کی شدت کے ستائے شہریوں خصوصاََ روزہ داروں نے واپڈا حکام بری طرح کوسنے دیئے اور جھو لیاں اٹھا اٹھا کر بدعائیں دیں۔ْ ْْْْْْْْْْْْْْْْْکوٹ اسلام سے نمائندہ پاکستانکے مطابقمیپکو سب ڈویژن سرائے سدھو،قتال پور فیڈر پر بجلی کی بدترین غیر اعلانیہ لوڈ شیدنگ کا سلسلہ 16 گھنٹوں سے تجاوز کر گیا ۔جس کی وجہ سے،کوٹ اسلام،25پل ،درکھانہ،جڑالہ و گردونواح کے مضافات میں شہریوں کی جان پے بن گئی۔ماہ صیام کے بابرکت مہینے میں شدید گرمی میں طویل لوڈ شیڈنگ کے باعث روزہ دار پریشان ہیں ،مساجد اور گھروں میں پانی کے حصول کے لیئے شدید پریشانی کا سامنا ہے ۔بجلی کی بار بار بندش اور وولٹیج انتہائی کم ہونے کی صورت میں لوگوں کا قیمتی سامان الیکٹرونکس جلنا معمول بن چکا ہے۔ میاں چنوں سے نمائندہ خصوصی کے مطابق سخت گرمی میں غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری روزے دار بلبلا اٹھے گھروں اور مساجد میں پانی کی قلت تفصیل کے مطابق میاں چنوں اور گردونواح میں درجہ حرارت 46ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچتے ہی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ بھی عروج پر پہنچ گیا ،غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کی وجہ سے روز دار بلبلا اٹھے گھروں اور مساجد میں پانی ختم ہونے سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا رہا مسلسل تین تین گھنٹے کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ سے شہری عذاب میں مبتلا رہے ۔وہاڑی سے بیورو رپورٹ‘ نما ئندہ خصوصی کے مطابق بجلی کی طویل غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ، فسٹ ایئر کے امتحان جاری ہیں اور دوران پیپر بجلی کی بندش سے سنٹر کے کمروں میں بیٹھنا محال ہو جا تا ہے محکمہ تعلیم کی طرف سے بجلی کی لوڈشیڈنگ ہونے کی صورت میں جنریٹر کا منا سب بندوبست نہ ہونے کی وجہ سے کئی روزہ دار طلباوطالبات گرمی سے نڈھال ہو نے لگے ، جس پر عوامی وسماجی اور طلبا وطالبات کے والدین شفقت ، عثمان علی ، اجمل ساقی ، اظہر اسلام ودیگر نے احتجاج کیا ہے کہ اس گرمی کی شدت کی وجہ سے طلباء وطالبات کی مشکلات اور پریشانی میں اضافہ ہونے لگا ہے انہوں نے بتایا کہ محکمہ تعلیم کے متعلقہ اعلیٰ حکام فوری طورپر بجلی لوڈشیڈنگ کی صورت میں منا سب انتظام جنریٹر کا کیا جا ئے۔میلسی سے نمائندہ پاکستان کے مطابق میلسی میں سورج سوا نیزے پر آگیا شدید ترین گرمی سے روزہ دار نڈھال ہو گئے میپکو کی جانب سے جاری لورڈشندنگ نے جلتی پر تیل کا کام کیا شدید گرمی کی وجہ سے بازار اور سڑکیں سنسان ہو گئیں اور شہری گرمی سے بچنے کے لیے گھروں میں دبکے رہے زرعی ماہرین نے موسمی تغیرات کا مقابلہ کر نے کیلئے حکومتی سطح پر قومی شجر کاری کی ضرورت پر زور دیا ہے تاکہ ماحول کی سختی کو درختوں کی بہتات کے ذریعے روکا جا سکے۔کوٹ ادوسے تحصیل رپورٹرکے مطابق ملک بھر کی طرح کوٹ ادو بھی شدید گرمی کی لپیٹ میں آگیاہے‘کوٹ ادو میں اس وقت درجہ حرارت46سینٹی گریڈ سے بھی تجاوز کر گیا‘گرمی کی شدت میں اضافہ ہونے سے سڑکیں ویران ہوگئیں کاروبار زندگی معطل ہو کر رہ گیاجبکہ روزہ داروں اور نوجوانوں نے گرمی کی شدت سے بچنے کیلئے سوئمنگ پول کا رخ کر لیا۔گرمی کی وجہ سے بچے اور بوڑھے بھی پریشان ہیں بجلی کی لوڈشیڈنگ اور گرمی کی شدت میں اضافہ سے شہری پریشان ہو کر رہ گئے۔راجن پور سے ڈسٹر کٹ رپورٹرکے مطابق راجن پور میں سخت گرمی اور شدید لو کاسلسلہ جاری ،درجہ حرارت 49 ڈگری ریکارڈ ،شہری دن بھر گھروں میں محصور رہے ،ماہ مئی کا گرم ترین دن رہا دن بھر شدید لو صبح نوبجے سے شروع ہو کر بعد ازغروب تک جاری رہی ،سخت گرمی کے ساتھ پانچ گھنٹے کی شہری علاقوں میں جبکہ دس گھنٹے کی دیہی علاقوں میں لوڈ شیڈ نگ نے شہریوں کی چیخیں نکال دی ہیں عوامی وشہری حلقوں نے وفاقی وزیر پانی وبجلی ،چیئر مین واپڈا ،چیئر مین میپکو ملتان سے مطالبہ کیا ہے کہ سخت گرمی کی لہر کے ایام میں لوڈشیڈ نگ نہ کی جائے ۔داجل سے نامہ نگارکے مطابق داجل، لال گڑ ،ہڑند ،محمد پور،نوشہرہ، ٹبی سولگی،ٹبی لنڈان،مڈرندان اور دیگر علاقہ میں گزشتہ ایک ہفتہ سے سورج طلوع ہوتے ہی آگ برسنے لگی جس معمولات زندگی شدید متاثر ہو کر رہ گے شہری 10بجے سے لے کر شام تک گھروں میں محصورہو کر رہنے پر مجبور ہیں تا ہم بجلی کی بلا تعتول فراہمی سے روزے داورں بزورگوں نوجواں خواتیں نے سکھ کا سانس لیا ہے دریں اثناء مساجد میں نمازیوں نے رب ذورالجلال کے حضور باران رحمت کی دعا کی ہے ۔ڈاہرانوالہ سے نامہ نگارکے مطابقڈاہرانوالہ اور گرد نواح کے علاقوں میں قیامت خیز گرمی کی شدت برقرار ہے اور اس میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ڈاہرانوالہ سمیت پورے ضلع بہاولنگر میں درجہ حرارت48سینٹی گریڈ سے بھی تجاوز کر گیا ہے۔جبکہ گرمی کی شدت کی وجہ سے مویشی بھی ہلاک ہو رہے ہیں اور درختوں کے پتے بھی لو کی شدت کی وجہ سے جلنے لگے ہیں۔ڈاہرانوالہ کی سڑکوں پر دوپہر کے وقت ہو کا عالم ہوتا ہے۔تمام چرند پرند پناہ لینے پر مجبور ہیں۔شدید لو کی وجہ سے کپاس کی فصل کو شدید نقصان پہنچ رہا ہے۔ہیٹ اسٹروک کی وجہ سے کئی افراد بے ہوش گئے۔نہر مراد میں پانی آ جانے کی وجہ سے نوجوانوں نے نہروں کا رخ کر لیا۔خالد حسین نے لوگوں کو شدید گرمی سے بچاؤ کے لیے احتیاطی تدابیر اختیار کرنے اور دوپہر کے اوقات میں بلا ضرورت گھر سے باہر نہ نکلنے کا مشورہ دیا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -