دوسرا ٹیسٹ ،پہلے روز کا کھیل ختم ،انگلینڈ نے دو کٹوں کے نقصان پر 106 رنز بنا لیے

دوسرا ٹیسٹ ،پہلے روز کا کھیل ختم ،انگلینڈ نے دو کٹوں کے نقصان پر 106 رنز بنا لیے
دوسرا ٹیسٹ ،پہلے روز کا کھیل ختم ،انگلینڈ نے دو کٹوں کے نقصان پر 106 رنز بنا لیے

  

لیڈز (ڈیلی پاکستان آن لائن) لیڈز ٹیسٹ کے پہلے روز  کے اختتام پر قومی کرکٹ ٹیم کے 174 رنز کے جواب میں  انگلینڈ نے  دو کٹوں  کے نقصان پر 106 رنز بنا لیے ہیں تاہم ابھی 68 رنز کا خسارہ باقی ہے۔ پاکستان کی جانب سے حسن علی اور فہیم اشرف نے ایک ایک کھلاڑی کو آوٹ کیا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کے 174 رنز کے جواب میں انگلینڈ کی جانب سے الیسٹر کک اور جیننگ نے میدان میں اتر کر کھیل کا آغاز کیا لیکن کک 46 رنز بنا کر حسن علی کی گیند پر سرفراز احمد کے ہاتھوں کیچ آوٹ ہو گئے جبکہ دوسرے نمبر پر آنے والے جیننگز 29 رنز بنانے میں کامیاب ہوئے فہیم اشرف کی گیند پر کیچ آوٹ ہو کر پولین لوٹ گئے۔ انگلینڈ نے 2 وکٹوں کے نقصان پر 106 رنز بنا لیے ہیں جبکہ ابھی 68 رنز کا خسارہ باقی ہے۔

اس سے قبل لارڈز ٹیسٹ کی فتح کا نشہ لیڈز میں اتر گیا جہاں انگلش باﺅلرز نے قومی بیٹنگ لائن کی دھجیا ں بکھیر دیں اور پوری ٹیم پہلی اننگز میں 174 رنز پر آﺅٹ ہو گئی۔ قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا تو امام الحق صفر پر پویلین لوٹ گئے جبکہ 17 کے مجموعی سکور پر اظہر علی بھی آﺅٹ ہو گئے۔

حارث سہیل اور اسدشفیق نے تیسری وکٹ کی شراکت میں 32 رنز جوڑ کر کچھ مزاحمت دکھانے کی کوشش کی مگر 49 کے مجموعی سکور پر حارث سہیل بھی ہمت ہار گئے اور 28 رنز بنا کر ووکس کی گیند پر ملان کے ہاتھوں کیچ ہو گئے۔ حارث سہیل کے جانے کے بعد اسد شفیق بھی زیادہ دیر کریز پر ٹھہر نہ سکے اور 62 کے مجموعی سکور پر اپنی وکٹ گنوا بیٹھے۔ انہوں نے 27 رنز بنائے اور ووکس کی گیند پر الیسٹر کک کے ہاتھوں کیچ ہوئے۔

صرف 78 کے مجموعی سکور پر کپتان سرفراز احمد 14 رنز بنا کر اینڈرسن کی گیند پر بولڈ ہو گئے جبکہ 78 ہی کے مجموعی سکور پر اپنے کیرئیر کا پہلا ٹیسٹ میچ کھیلنے والے عثمان صلاح الدین بھی 4 رنز بنا کر براڈ کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہو گئے۔ مجموعی سکور میں صرف ایک سکور کے اضافے کے بعد فہیم اشرف بھی کوئی سکور بنائے بغیر اینڈرسن کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہو گئے۔

پاکستان کا مجموعی سکور 113 پر پہنچا تو محمد عامر بھی ہمت ہار بیٹھے اور 13 رنز بنا کر جیمز اینڈرسن کی گیند پر جونی بیرسٹو کے ہاتھوں کیچ ہو گئے۔ پاکستان کی نوویں وکٹ 156 کے مجموعی سکور پر گری جب حسن علی 24 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔ کرس ووکس نے اپنی ہی گیند پر ان کا کیچ پکڑا۔ آخری آﺅٹ ہونے والے کھلاڑی شاداب خان تھے جنہوں نے 56 رنز بنائے اور کیورن کی گیند پر جیننگز کے ہاتھوں کیچ ہوئے۔

انگلینڈ کی جانب سے سٹورٹ براڈ، کرس ووکس اور جیمز اینڈرسن نے تباہ کن باﺅلنگ کرتے ہوئے پاکستانی بیٹنگ لائن تہس نہس کر دی۔ تینوں باﺅلرز نے عمدہ باﺅلنگ کا مظاہر کرتے ہوئے تین، تین وکٹیں حاصل کیں۔

قبل ازیں قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے کہا کہ لیڈز وکٹ بیٹنگ کیلئے سازگار نظر آ رہی ہے اور اس کا فائدہ حاصل کرنے کی کوشش کریںگے۔

قومی ٹیم کی جانب سے اس اہم ترین میچ میں نوجوان بلے باز عثمان صلاح الدین کو ٹیسٹ کیپ دی گئی جنہیں لارڈز ٹیسٹ کے دوران زخمی ہونے والے بابر اعظم کی جگہ ٹیم میں شامل کیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ آخری مرتبہ قومی ٹیم نے وسیم اکرم کی قیادت میں 1996ءمیں انگلینڈ کو دو ایک سے شکست دے کر سیریز اپنے نام کی تھی جبکہ گزشتہ 8 میں سے 6 ٹیسٹ ہارنے والی انگلش ٹیم اس وقت بدترین دور سے گزر رہی ہے جسے میچ جیت کر سیریز بچانے کا مشکل ترین چیلنج درپیش ہے۔

پاکستانی ٹیم متحدہ عرب امارات میں 13-2012ءمیں انگلینڈ کے خلاف کلین سوئپ کر چکی ہے اور اگر آج شروع ہونے والے لیڈز ٹیسٹ میں قومی ٹیم نے میزبان ٹیم کو شکست دی تو چیمپینز ٹرافی جیتنے والے سرفراز احمد سمیت کوچ مکی آرتھر اور چیف سلیکٹر انضمام الحق کے نام ایک اور اعزاز ہو جائے گا۔

مزید :

کھیل -