”لگے رہو، فحش فلم بن جائے گی تو اس کے بھی پیسے ملیں گے۔۔۔“ عامر خان کی اپنی بیٹی کیساتھ ایسا کام کرتے ہوئے تصویر سامنے آ گئی کہ بھارت بھر میں ہنگامہ برپا ہو گیا، سوشل میڈیا پر ایسا طوفان مچا کہ ہر کسی نے آڑے ہاتھوں لے لیا

”لگے رہو، فحش فلم بن جائے گی تو اس کے بھی پیسے ملیں گے۔۔۔“ عامر خان کی اپنی ...
”لگے رہو، فحش فلم بن جائے گی تو اس کے بھی پیسے ملیں گے۔۔۔“ عامر خان کی اپنی بیٹی کیساتھ ایسا کام کرتے ہوئے تصویر سامنے آ گئی کہ بھارت بھر میں ہنگامہ برپا ہو گیا، سوشل میڈیا پر ایسا طوفان مچا کہ ہر کسی نے آڑے ہاتھوں لے لیا

  

نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن) سوشل میڈیا پر تنقید اور مذاق کا نشانہ بننا معمول بن چکا ہے اور یوں محسوس ہوتا ہے کہ فلمی ستاروں کو تنقید کا نشانہ بنانا ”انٹرنیٹیوں“ کا پروفیشنل مشغلہ بن چکا ہے۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔خواجہ آصف نا اہلی کا فیصلہ کالعدم قرار ، سپریم کورٹ نے الیکشن میں حصہ لینے کی اجازت دے دی 

فلمی ستارے اپنی جتنی یادہ تصاویر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کرتے ہیں اتنے ہی تنقید کا نشانہ بھی بنتے ہیں اور اس کا تازہ ترین شکار بننے والے کوئی اور نہیں بلکہ مسٹر پرفیکشنسٹ عامر خان ہیں۔ عامر خان نے حال ہی میں اپنے کزن منصور خان کی 60 ویں سالگرہ منائی اور اس سلسلے میں کرناٹکا گئے۔ منصور خان 1988ءکی سپرہٹ فلم ’قیامت سے قیامت تک‘ کے ڈائریکٹر ہیں۔

ان کی سالگرہ کے موقع پر سامنے آنے والی تصاویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ عامر خان اپنی فیملی کے ہمراہ وہاں موجود تھے اور پرسکون ماحول میں بہترین وقت گزارتے رہے۔

اس دوران انہوں نے اپنی 21 سالہ بیٹی ایرا خان کیساتھ بھی وقت گزارا جس دوران دونوں ایک دوسرے کیساتھ کھیلتے ہی رہے اور اس کھیل ہی کھیل میں دونوں کی ایسی تصویر سامنے آ گئی کہ بھارتی آپے سے باہر ہو گئے۔

عام طور پر کسی بھی شخص کو اس تصویر پر کوئی اعتراض نہیں ہو گا اور سب ہی اسے باپ اور بیٹی کے درمیان بہترین لمحات کی تصویر کہیں گے لیکن سوشل میڈیا صارفین کو یہ تصویر ایک آنکھ نہ بھائی جنہوں نے رمضان المبارک کی یاد دلاتے ہوئے کہا کہ انہیں اپنی بیٹی کیساتھ اس طرح نہیں کھیلنا چاہئے۔

عاشق بھٹ نامی صارف نے لکھا ”بھائی بیٹی ہے تو کیا ہوا۔۔۔ کم از کم رمضان کے مہینے میں ایسے پوز نہ دیتے“

اسد ظفر نے لکھا ”لگے رہو، فحش فلم بن جائے گی۔۔۔ اس کے بھی پیسے ملیں گے“

محمد ابراہیم نے لکھا ”رمضان مبارک۔۔۔ یہ ناقابل قبول ہے“

معین جان نے لکھا ”معاف کرنا عامر، میں آپ کا مداح ہوں لیکن آپ کی بیٹی اب بالغ ہو چکی ہے اور آپ اس کیساتھ ایسے نہیں کھیل سکتے۔ ہر چیز کی حد ہوتی ہے۔ آپ کی بیٹی نے مختصر لباس پہنا ہوا ہے اور یہ مجھے اچھا نہیں لگا“

عاشق بھٹ نے لکھا ”کچھ تو خوف کھاؤ اللہ کا سر۔۔۔ میں آپ کا اور کام کیساتھ آپ کے لگاﺅ اور سخت محنت کا بے حد احترام کرتا ہوں۔۔۔ لیکن یہ سب کچھ ناقابل قبول ہے“

ایلس نے لکھا ”میرے خیال سے دنگل کی طرح یہاں بھی باپ اور بیٹی کے درمیان کشتی سیشن چل رہا ہے اور بیٹی جیت گئی ہے۔۔۔ بس اتنی سی بات ہے، وہ سب کو احتجاج کر رہے ہیں، اپنے ذہن صاف کریں۔“

جوئس سانیال نے لکھا ”پیاری فیملی بہت زیادہ قابل قبول ہے! صرف غیر لوگوں کو ہی اس میں کچھ برا نظر آئے گا کیونکہ وہ ایرا کے فیملی کا حصہ نہیں ہیں“

دشنا نے لکھا ”یہ بہت ہی پیاری تصویر ہے۔۔۔ باپ اور بیٹی کا پیار بہت قیمتی ہے“

تری بھوون نارائن نے لکھا ” یہ باپ اور بیٹی کا پیار ہے بھائی۔۔۔ اس سے بھی لوگوں کو مسئلہ ہے۔۔۔ ایک باپ اپنے جوان ہو جانے والے بچے کیساتھ نہیں کھیل سکتا“

ابھینی وینے نے لکھا ”حیران ہو رہی ہوں کہ رمضان میں باپ اپنے بچوں کو پیار نہیں کر سکتا“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -تفریح -