پاکستان نے امریکہ کو اب تک کی سب سے بڑی دھمکی دیدی

پاکستان نے امریکہ کو اب تک کی سب سے بڑی دھمکی دیدی
پاکستان نے امریکہ کو اب تک کی سب سے بڑی دھمکی دیدی

  

اسلام آباد ، واشنگٹن(ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق وفاقی وزیر خرم دستگیر نے کہاہے کہ امریکہ پاکستان تعلقات خراب ترین سطح پر پہنچ چکے ہیں اور دونوں ملک ایک دوسرے سے بات کرنے پر رضامند نہیں ،پاکستان امریکہ کے ساتھ تعلقات کا ازسر نو جائزہ لے رہا ہے اور اس کے نتیجے میں پاکستان افغانستان میں موجود امریکی فوج کیلئے سپلائی لائن روک سکتا ہے۔

وائس آف امریکہ کے مطابق خرم دستگیر نے بتایاکہ امریکہ اور پاکستان طویل عرصے سے ایک دوسرے کے اتحادی رہے ہیں تاہم اس وقت دوطرفہ تعلقات میں بگاڑ اس نہج پر پہنچ گیا ہے کہ دونوں ملکوں کے درمیان اونچی سطح پر رابطے مکمل طور پر منقطع ہو چکے ہیں۔ اب صورت حال یہ ہے کہ اسلام آباد میں موجود امریکی سفیر دفتر خارجہ میں آ کر ہمارے اہلکاروں سے بات کرتے ہیں اور واشنگٹن میں تعینات پاکستانی سفیر امریکی محکمہ خارجہ سے بات کرتے ہیں۔ ا ن کا کہنا تھا کہ یہ دونوں ملکوں کے درمیان معمول کے رابطوں کا طریقہ نہیں ہے اور اب پاکستان اور امریکہ ایک دوسرے سے کوئی بات نہیں کر رہے ہیں۔

ا±نہوں نے کہا کہ ٹرمپ انتظامیہ کی طرف سے رابطے برقرار نہ رکھنے پر اصرار کی وجہ سے تعلقات خراب ترین سطح پر پہنچ گئے ہیں اور یہ ایسی صورت حال ہے جس میں پاکستان کے مو¿قف کو سنے جانے کے بجائے محض نگرانی پر رکھا جا رہا ہے، سفارتی رابطوں کے علاوہ واحد رابطہ امریکی سینٹکوم کے کمانڈر جنرل جان ووٹل کا پاکستان کے فوجی سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ سے رابطہ ہے۔

پاکستانی وزیر خارجہ نے کہا کہ رسمی طور پر پاکستان اب بھی امریکہ کا ایک کلیدی نان نیٹو اتحادی ہے اور امریکہ کی طرف سے پاکستان کو دہشت گردوں کو مالی اعانت فراہم کرنے والے ملکوں کی فہرست میں شامل کروانے پر اصرار نے پاکستانی حکومت کو مجبور کر دیا ہے کہ وہ امریکہ کے ساتھ تعلقات پر نظر ثانی کرے۔

یادرہے کہ پاکستان اس سے پہلے بھی ایک دفعہ سپلائی لائن منقطع کر چکا ہے جب 2011 میں امریکی فضائیہ نے غلطی سے حملہ کر کے دو درجن پاکستانی فوجیوں کو ہلاک کر دیا تھا جس کے بعد امریکہ اور ا±س کے نیٹو اتحادی دیگر ممالک کے راستے سمندری یا فضائی طریقے سے ساز و سامان کی ترسیل پر مجبور ہو گئے تھے۔

مزید :

قومی -