کورونا ویکسین کی تیاری جاری، دستیابی آئندہ سال اکتوبر تک متوقع ہے، فواد چوہدری

    کورونا ویکسین کی تیاری جاری، دستیابی آئندہ سال اکتوبر تک متوقع ہے، فواد ...

  

لاہور(این این آئی)سائنس و ٹیکنالوجی کے وفاقی وزیر فواد چوہدری نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کے علاج کی ویکسین کی تیاری ابتدائی مراحل میں ہے اور اس کی دستیابی آئندہ سال اکتوبر تک متوقع ہے۔سرکاری ریڈیو کے مطابق حالات حاضرہ کے پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کوئی ملک تنہا ویکسین تیار نہیں کر سکتا اور اس کیلئے عالمی تعاون کی ضرورت ہے۔ انہوں نے عوام کو ہدایت کی کہ وہ وائرس کی روک تھام کیلئے ویکسین کی تیاری تک قواعد و ضوابط پر سختی سے عمل کریں۔موسمیاتی تبدیلی کی وزیر مملکت زرتارج گل نے کہا کہ حکومت کورونا وائرس کی روک تھام کیلئے تمام ممکن کوششیں کر رہی ہے تاہم یہ بدقسمتی ہے کہ عوام اس وبا ء کو سنجیدگی سے نہیں لے رہے۔ انہوں نے کورونا وائرس کی روک تھام کیلئے احتیاطی تدابیر سے متعلق لوگوں میں آگاہی پیدا کرنے کے حوالے سے ریڈیو پاکستان کے کردار کو سراہا۔پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے برطانیہ میں پاکستان کے ہائی کمشنر نفیس زکریا نے کہا کہ برطانیہ میں پھنسے پاکستانیوں کو مرحلہ وار واپس لایا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ابھی تک تقریباً4 سو پاکستانی برطانیہ میں ہیں تاہم وہ جلد اپنے وطن پاکستان آئیں گے۔ وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے ایک بارپھر اسمبلیوں کے مواصلاتی سیشن منعقد کرنے کا مشورہ د یتے ہوئے کہا ہے کہ ایک درجن سے زائد ارکان پارلیمنٹ کورونا وائرس کا شکار ہو چکے ہیں،براہ راست اجلاس کی بجائے ورچوئل سیشن کا انقعاد کیا جائے، مواصلاتی سیشن سے اخراجات اور بیماری کے خدشات سے بچا جا سکتا ہے۔سماجی رابطے کی ویب سایٹ ٹوئٹر پر اپنے ایک بیان میں وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہا ہے کہ اسمبلی کے براہ راست اجلاسوں کے بعد ارکان پارلیمان میں کورونا کے کیسز سامنے آئے ہیں، پنجاب اسمبلی کا اجلاس ہوٹل میں کرنا پیسے کا ضیاع ہوگا، پنجاب اسمبلی کے ہوٹل میں اجلاس سے اضافی طورپر دو کروڑ سیزائد اخراجات برداشت کرنا ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ ہم ٹیکنالوجی سے فائدہ کیوں نہیں اٹھا رہے، براہ راست اجلاس کی بجائے ورچوئل سیشن کا انقعاد کیا جائے، مواصلاتی سیشن سے اخراجات اور بیماری کے خدشات سے بچا جا سکتا ہے۔فواد چودھری نے اپنے ٹویٹ میں غیر ملکی ڈراموں کی بجائے پاکستانی پروڈکشن کو مضبوط کرنے کا مشورہ بھی دیا، ان کا کہنا تھا کہ حیران ہوں کہ پی ٹی وی ہوم غیرملکی پرڈکشن کے ڈراموں پر نازاں ہے، پاکستانی پروڈکشن پر فوکس کرنا ہوگا، ایسا نہ ہوا تو غیرملکی ڈرامے پاکستانی پروڈکشن کو تباہ کردیں گے، غیر ملکی ڈرامہ امپورٹ کرنا ہمیشہ سے سستا رہا ہے مگر غیر ملکی ڈرامہ پاکستانی پروگرامنگ کو تباہ کردے گا۔ فواد چودھری کا شہرہ آفاق ترکش ڈرامہ 'ارطغرل غازی' کے خلاف بیان کے بعد سوشل میڈیا پر ایک نئی بحث شروع ہوگئی ہے۔فواد چودھری کے اس بیان پر ایک صارف کی جانب سے کمنٹ کیا گیا کہ 'پی ٹی وی کو 'ارطغرل غازی' کی طرح کا ڈرامہ تیار کرنے دیں، کیا وہ یہ کر سکتے ہیں۔صارف کے سوال کا جواب دیتے ہوئے وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ ہاں کیوں نہیں۔

فواد چودھری

مزید :

صفحہ اول -