پی ٹی آئی امریکہ کے الیکشن، امریکی عدالت نے مدعا علیہ کے وکیل کو موکل کی نمائندگی سے روک دیا

پی ٹی آئی امریکہ کے الیکشن، امریکی عدالت نے مدعا علیہ کے وکیل کو موکل کی ...

  

نیویارک (آئی این پی) امریکہ میں پاکستان تحریک انصا ف کے اندرونی معاملات کے سلسلے میں امریکی وفاقی عدالت میں دائر و زیر سماعت کیس نے ایک نیا اور اہم رخ اختیار کر لیا، نیویارک میں قائم وفاقی عدالت سے رجو ع کرنے پر تحریک انصاف ایل ایل سی کی استدعا پر عدالت نے تحریک انصاف کے دوسرے گروپ (مدعا علیہ) کے اٹارنی (وکیل) کو اپنے موکل کی نمائندگی سے روک دیا ہے اور مدعا علیہ سے کہا ہے کہ وہ نئے اٹارنی کا انتظام کرے۔ امریکہ کی ”یو ایس ڈسٹرکٹ کورٹ سادرن ڈسٹرکٹ آف نیویارک“ میں عمران اگرہ نے بطور مدعی پاکستان تحریک انصاف یو ایس ا ے ایل ایل سی (جو کہ پی ٹی آئی یو ایس اے، ایل ایل سی کے نام سے بھی جانی جاتی ہے) کی جانب سے امریکہ میں موجود تحریک انصاف کے دوسرے گروپ ’’پی ٹی آئی یو ایس اے“ (مدعا علیہ) کیخلاف پارٹی میں ہونیوالے انٹرا پارٹی الیکشن کے معاملات کے حوالے سے کیس دائر کیا تھا۔ کیس کی سماعت کے دوران مدعی (پاکستان تحریک انصاف یو ایس ا ے ایل ایل سی) کے طور پر عمران اگرہ نے عدالت سے میں موشن دائر کی کہ مدعا علیہ (پی ٹی آئی یو ایس اے) کے اٹارنی مسٹر سلور ناجا تھن سے کیس کی سماعت سے قبل بطورمدعی نے ان کی اٹارنی کی حیثیت سے اپنے قانونی معاملات پر بات چیت کی تھی، اس لئے اس کیس کے حوالے سے مسٹر جانا تھن جو کہ اب مدعا علیہ کے اٹارنی ہیں، کے پاس مدعی کی جانب سے پہلے سے کی جانیوالی مشاورت کے حوالے سے اہم معلومات ہیں۔ مدعی نے استدعا کی کہ مذکورہ صورتحال عدالت میں زیر سماعت ان کے کیس پر اثر انداز ہو سکتے ہیں۔مدعی کی جانب سے ”یو ایس ڈسٹرکٹ کورٹ سادرن ڈسٹرکٹ آف نیویارک“کی یو ایس ڈسٹرکٹ جج جج ویلیری کیپرونل،سے استدعا کی گئی کہ اٹارنی سلور جانا تھن کو مدعا علیہ کی وکالت سے روکا جائے۔فاضل جج ویلیری نے مدعی کی استدعا قبول کرتے ہوئے اٹارنی مسٹر سلور ناجا تھن کو مدعا علیہ کی نمائندگی سے روک دیا۔

تحریک انصاف یو ایس اے

مزید :

صفحہ آخر -