پاکستان میں تمام اقلیتیں محفوظ، وائرس سے پوری دنیا متاثر، بجٹ میں کرونا اثرات نظر آئیں گے: شاہ محمود

پاکستان میں تمام اقلیتیں محفوظ، وائرس سے پوری دنیا متاثر، بجٹ میں کرونا ...

  

ملتان(سٹی رپورٹر )وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان نے ہندو تاجر چیلا رام کو اقلیتی کمیشن کا چیئرمین بنا کر دنیا کو پیغام دیا کہ یہاں اقلیتوں کی عبادت گاہیں محفوظ ہیں۔ اقلیتوں کو آزادی اور تمام حقوق حاصل ہیں۔ اس کے برعکس انڈیا نے چار سو سالہ تاریخی بابری مسجد کو شہید کرکے دنیا کو اپنا تعصب زدہ چہرہ دکھا دیا۔کاش ہندوستان کے مسلمان یہ کہہ سکتے 400 سال پرانی بابری مسجد آباد ہے۔ پاکستانی مسلمانوں کے لئے یہ فخر کہ یہ چرچ آباد اور ہم اس کے محافظ ہیں۔بابری مسجد کی شہادت پربھارتی سپریم کورٹ تماشائی بنی رہی جبکہ پاکستان حکومت نے سپریم کورٹ کی رہنمائی میں اقلیتی کمیشن تشکیل دیا۔جس میں تمام مذاہب کے ماننے والوں کی نمائندگی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز سینٹ میری چرچ ملتان میں بین المذاہب یکجہتی کے حوالے سے دورہ کے دوران میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ چیئرمین منیارٹی کمیشن و رکن قومی اسمبلی چیلا رام‘ وفاقی پارلیمانی سیکرٹری اقلیتی امور شنیلا روت‘ صوبائی پارلیمانی سیکرٹری انسانی حقوق مہندر پال سنگھ‘ چیئرمین ایم ڈی اے میاں جمیل بھی اس موقع پر موجود تھے۔حکومت پاکستان نے اقلیتوں سے اظہار یکجہتی کیلئے اقلیتی کمیشن تشکیل دیا، جس میں تمام مذاہب کو نمائندگی دی گئی ہے۔ سپریم کورٹ نے اس کمیشن کی تشکیل کے حوالے سے رہنمائی کی۔ جس کیلئے ہم مشکور ہیں۔چیئرمین اقلیتی کمیشن حکومت کو اقلیتوں کے حوالے سے جامع سفارشات پیش کریں گے۔انہوں نے کہا ہمیں ہماری اقلیتوں پر فخر ہے۔ہم پاکستان میں رہنے والے ہندو برادری کے مشکور ہیں۔ جنہوں نے ہجرت کا موقع ہونے کے باوجود پاکستان کا انتخاب کیا۔عمران خان کی حکومت نے سکھ برادری کے لیے محبت اور خیر سگالی کے پیغام کے لئے کرتار پور بارڈر کھولا۔ آج بنگلہ دیش، اور نیپال سے بھی ہندوستان کے خلاف آوازیں آ رہی ہیں۔ کھٹمنڈو سے آواز آ رہی ہے کہ ہندوستان ہماری سرزمین پر قابض ہے۔ پاکستان کشمیر اور چین اپنے علاقے کے لئے بھارت سے جھگڑ رہا ہے۔چین نے بھارت کو مل بیٹھ کر معاملات حل کرنے کی دعوت دی لیکن بھارت نے چالاقی سے کام کیا۔ لداخ کے حوالے سے چین کے تحفظات بھی سامنے آگئے ہیں۔ہندوستان میں اقلیتیں غیر محفوظ ہیں۔ اقلیتوں کو تحفظ دینا ہندوستان کی سرکار کا فرض ہے۔بھارت سیٹیزن ایکٹ کے ذریعے اقلیتوں خصوصاً مسلمانوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ بھات میں آر ایس ایس کی سوچ دنیا کے سامنے عیاں ہو چکی ہے۔ سری نگر کی جامعہ مسجد پر تالا لگا ہوا ہے، بھارت میں مسلمانوں کی عبادت گاہیں محفوظ نہیں۔ہم نے جنیوا میں ہیومین رائٹس کے اجلاس میں بھارتی مسلمانوں پر ظلم کو اجاگر کیا۔بھارت میں مسلمانوں کے ساتھ امتیازی سلوک پر اقوام متحدہ کو خط لکھا بھارت میں مسلمانوں کے ساتھ امتیازی سلوک کے خاتمے کیلئے اقوام متحدہ اور عالمی برادری کو آواز بلند کری چاہئے۔ انہوں نے کہا بطور وزیر خارجہ پاکستان میں نے سنت محمدی کے مطابق سابق بھارتی وزیراعظم منموہن سنگھ کو خوش آمدید کہا۔ بھارتی آئین اقلیتوں کو تحفظ دیتا ہے مودی سرکار آئین پر عمل کرے۔ہندوستان کی حکومت سے مطالبہ کرتا ہوں کہ پاکستان کے وزیر خارجہ کا بیشک مطالبہ نہ مانیں لیکن اپنے آئین پر عمل کریں جس کی امید نہیں ہے۔ہم آئین پاکستان کی پاسداری کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہاحکومت نے کورونا کے ایشو پرسیاسی پوائنٹ سکیورنگ نہیں کی بلکہ کوشش کی کورونا کے معاملے پر یکجہتی پیدا کی جائے۔ اپوزیشن نے کورونا وائرس کے معاملے پر تنقید تو کی مگر تجویز کوئی نہیں دی۔میں اپوزیشن سے درخواست کرونگا کہ وہ ٹی وی ٹاک شو ز میں حکومت پر بیشک تنقید کریں لیکن پارلیمنٹ میں کورونا کے حوالے سے اپنی تجاویز پیش کریں۔ وزیراعظم ان کی تجویز پر غور کریں گے۔ انہوں نے کہا بیرون ملک پاکستانیوں کی واپسی کے لئے وفاق کی طرف سے رکاوٹ نہیں،بلکہ صوبائی حکومتوں کا تعاون درکار ہے۔سیلف قرنطینہ کی اجازت کے لئے کل اجلاس میں فیصلہ کیا جائے گا۔اجازت ملتے ہی بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی واپسی کی رفتار میں اضافہ ہوگا۔بجٹ کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا عالمی معیشت کے ساتھ پاکستان کی معیشت پر بھی کورونا وائرس کا اثر پڑا ہے۔ کورونا وائرس سے ساری دنیا متاثر ہے۔بجٹ آ رہا ہے، بجٹ پر کورونا کے اثرات نظر آئیں گے۔اس وقت کی مالی مشکلات سب کے سامنے ہیں۔ تاہم ہماری کوشش ہوگی بجٹ میں ہم متوسط طبقے کے ریلیف دیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو کورونا کے دوران بیروز ہونے والے اور کورونا کے متاثرین کی معاشی مشکلات کا مکمل احساس ہے۔ کورونا کے باعث بیروزگار ہونیوالوں سے وزیراعظم نے اپنے پورٹل پر درخواستیں طلب کیں ہیں۔ جبکہ احساس پروگرام کے تحت اربوں روپے تقسیم کئے ہیں۔ چینی سکینڈل کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں وزیر خارجہ نے کہا حکومت چینی سکینڈل کے معاملے پر کارروائی سے گریزاں نہیں ہے۔ پہلی حکومت ہے جس نے رپورٹ پبلک کی۔فرانزک رپورٹ کے بعد وزیر اعظم نے کہا ہے متعلقہ اداروں کو ذمہ داران جواب دیں۔کاشتکار کو کم قیمت اور غریب کو مہنگی چینی دینے والو کو جواب دینا ہوگا۔چینی سکینڈل کے ذمہ داروں کیخلاف ایف آئی اے‘ ایف بی آر اور دیگر قانون نافذ کرنے والے ادارے بلا امتیاز کارروائی کریں گے۔ سی پیک کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا سی پیک بالکل محفوظ ہے۔ پوری قوم کی یکجہتی ہے کہ سی پیک پایہ تکمیل تک پہنچانا چاہئے۔بھارت یا کسی اور طاقت کو پسند ہو یا نہ ہو سی پیک مکمل ہو کر رہے گا۔پاکستان کے ایٹمی پروگرام کا کریڈٹ کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انہو ں نے کہا ذوالفقار علی بھٹو نے ملتان میں میرے ماموں کے گھر ایٹمی پروگرام کا فیصلہ کیا۔پاکستان کے ایٹمی قوت بننے پر ایک شخص کا کریڈٹ نہیں ہے۔بلکہ سائنس دان، پاکستانی افواج اور مختلف حکومتیں پاکستان کو ایٹمی قوت بنانے پرخراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ قبل ازیں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی‘ چیئرمین اقلیتی کمیشن چیلا رام اور وفاقی پارلیمانی سیکرٹری اقلیتی امور شنیلا روت سینٹ میری کیتھڈرل چرچ ملتان پہنچے تو بشپ آف ملتان لیوراڈرک پال نے ان کا استقبال کیا۔ اور سینٹ میری چرچ کی تاریخ سے آگاہ کیا۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ سینٹ میری چرچ کی پراپرٹی اور عبادات کا تحافظ کیا جائے۔ جس پر وزیر خارجہ نے کہا کہ ان مطالبات نیشنل منیارٹی کمیشن کے چیئرمین چیلا رام نے سن لی ہیں وہ آپ کی سفارشات حکومت تک پہنچائیں گے۔ بعد ازاں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے بین المذاہب ہم آہنگی کے تحت ڈبل پھاٹک چوک پر واقع مندر کا دورہ کیا۔ اس موقع پر منیارٹی کمیشن کے چیئرمین چیلا رام‘ وفاقی پارلیمانی سیکرٹری اقلیتی امور شنیلا روت‘ صوبائی پارلیمانی سیکرٹری مہندر پال سنگھ بھی ان کے ہمراہ تھے#

شاہ محمود

مزید :

صفحہ اول -