عمر اکمل کی آخری ”لائف لائن“ کی سماعت کون سے سابق جج کریں گے اور تاریخ کا اعلان کب ہو گا؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

عمر اکمل کی آخری ”لائف لائن“ کی سماعت کون سے سابق جج کریں گے اور تاریخ کا ...
عمر اکمل کی آخری ”لائف لائن“ کی سماعت کون سے سابق جج کریں گے اور تاریخ کا اعلان کب ہو گا؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ ٹیم کے مڈل آرڈر بلے باز عمر اکمل کی آخری ”لائف لائن“ کا جلد فیصلہ ہوگا جن پر 3 سالہ پابندی کے خلاف اپیل کو سننے کیلئے سپریم کورٹ کے سابق جج جسٹس (ر) فقیر محمد کھوکھو کا تقرر کر دیا گیا ہے جبکہ سماعت کی تاریخ کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) 5 کے آغاز سے قبل 2الگ واقعات میں عمر اکمل نے بکیز کی جانب سے رابطے کا پی سی بی کو نہیں بتایا جس کا علم ہونے پر انہیں عبوری طور پر معطل کرتے ہوئے چارج شیٹ جاری کی گئی تاہم انہوں نے الزامات کو چیلنج نہیں کیا۔ اس لئے ٹربیونل تشکیل دینے کے بجائے معاملہ ڈسپلنری پینل کے چیئرمین جسٹس(ر) فضل میراں چوہان کے سپرد کر دیا گیا جنہوں نے فریقین کا موقف سننے کے بعد عمر اکمل پر 3 سال کی پابندی عائد کر دی۔

مڈل آرڈر بلے باز عمر اکمل نے اپنا قانونی حق استعمال کرتے ہوئے 19 مئی کو تین سالہ پابندی کی سزا کیخلاف اپیل دائر کی تھی جس کی سماعت کیلئے گزشتہ روز سپریم کورٹ کے سابق جج جسٹس(ر) فقیر محمد کھوکھر کو خودمختار ایڈجوڈیکٹر مقرر کردیا گیا جبکہ سماعت کی تاریخ کا فیصلہ ہونے پرپی سی بی اعلان کردے گا۔

واضح رہے کہ عمر اکمل نے اپنا کیس لڑنے کیلئے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنماءبابراعوان کی لاءفرم سے رجوع کیا ہے، عام طور پر بکیز کے رابطہ کی اطلاع نہ کرنے پر 6 ماہ کی پابندی عائد ہوتی ہے لیکن عمر اکمل کے تفصیلی فیصلے میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ وہ صاف لفظوں میں الزامات تسلیم کرنے کے بجائے حقائق چھپانے کیلئے جواز تراشتے رہے، اسی لئے 3 سال کی پابندی عائد ہوئی، ان کے وکلاءکی کوشش ہوگی کہ اگر سزا ختم نہیں ہوتی تو کم ضرور کرا دی جائے۔

مزید :

کھیل -