مختلف شہروں میں حادثے، 6افراد جاں بحق، 2لاشیں برآمد 

مختلف شہروں میں حادثے، 6افراد جاں بحق، 2لاشیں برآمد 

  

ملتان، چشتیاں، مظفر گڑھ، لودھراں، رحیم یارخان، شاہ جمال، ٹھٹھہ صادق آباد(خصوصی رپورٹر، نامہ نگار، نمائندہ پاکستان، نامہ نگار) چشتیاں بابا تاج الدین سرور چشتی کے مزار کے قریب موٹر سائیکل رکشہ اور ٹریکٹر ٹرالی کے مابین تصادم کے نتیجہ میں میاں بیوی جاں بحق بیان کیا جاتا ہے کہ نواحی بخشن خاں کا رہائشی محمد اجمل اپنی اہلیہ صغراں بی بی اور بچوں کے ہمراہ پرانی چشتیاں دربار روڈ اپنے سسرال سے ملنے آئے(بقیہ نمبر15صفحہ6پر)

، محمد اجمل اپنے تین بچوں کو سسرال کے ہاں چھوڑ کر اپنی بیوی اور دوبچوں کوسسرال کے ہاں چھوڑاپنی بیوی دو بچوں کے ہمراہ موٹر سائیکل رکشہ پر سوار ہو کر واپس جار ہے تھے۔ کہ مخالف سمت سے آنے والی تیز رفتار ٹریکٹر ٹرالی سے ٹکرا گئے جس کے نتیجہ میں دونوں میاں بیوی شدید زخمی ہو گئے۔ اور زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے ورثا نے حادثہ اتفاقیہ قرار دیکر کوئی کاروائی نہیں کی۔ دونوں میاں بیوی کو تجیز و تکفین کے بعد حضرت با با تاج الدین سرورچشتی کے مزار پر نماز جنازہ ادا کی گئی۔ جس میں سینکڑوں لوگوں نے شرکت کی۔ محمد اجمل نے اپنے پیچھے پانچ کمسن بچے (دو بیٹے تین بیٹیاں) سو گوار چھوڑے ہیں۔ تلیری کینال میں ڈوبنے والے کمسن بچے کی لاش مل گئی ریسکیو زرائع کے مطابق گزشتہ روز مگسی والی پل کے مقام پر تلیری کینال مظفرگڑھ کے کنارے 2 بچے کھیل رہے تھیکہ بستی کچی موضع لٹکراں مظفرگڑھ کا رہائشی 10 سالہ حیدر علی ولد عابد حسین نہر میں گر کر  ڈوب گیا تھا ریسکیو 1122 مظفرگڑھ کی ٹیم گزشتہ روز بچے کی لاش تلاش کرتی رہی لیکن کامیابی نہ ہوئی آج پھر ریسکیو 1122 کی ٹیم نے دوبارہ سرچ آپریشن شروع کر دیا اور 3 گھنٹے کی مسلسل تلاش کے بعد بچے کی لاش تلاش کرکے ورثا کے حوالے کر دی ہے ٹریفک حادثے میں شدید زخمی ہونے والے کمسن بچے سمیت 2افراد ہسپتال میں دم توڑ گئے، تفصیل کے مطابق ٹریفک کا پہلا حادثہ راجن پور کے رہائشی 9 سالہ ماجد کے ساتھ پیش آیا جسے سڑک کراس کرنے کے دوران تیز رفتار موٹر سائیکل سورا نے ٹکر مار دی جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہو گیا جبکہ دوسرا حادثہ صادق آباد رہائشی28 سالہ شعبان علی کے ساتھ پیش آیا جو اپنے موٹر سائیکل پر سوار ہو کر جا رہا تھا کہ تیز رفتاری کے باعث سامنے سے آنے والے رکشے سے ٹکرا گیا اور شدید زخمی ہو گیا ورثا نے طبی امداد کیلئے شیخ زید ہسپتال منتقل کیا جہاں طبی امداد کے باوجود دونوں افراد جانبر نہ پائے اور دم توڑ گئے۔خلیل آباد شریف دربار کے قریب گوپال نہر سے 45 سالہ شخص کی تیرتی ہوئی نعش برامد پولیس ذرائع کے مطابق اتوار کے روز  تھانہ صدر کے علاقہ شہیداں والا اسٹیشن خلیل آباد شریف دربار کے قریب گوپال نہر سے تقریبا45 سالہ نامعلوم شخص کی تیرتی ہوئی نعش برامد ہوئی  اہل علاقہ نے نعش کو نہر سے نکال کر پولیس کے حوالے کر دیا پولیس نینعش کو پوسٹ مارٹم کے لئے ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹرہسپتال منتقل کردیا ورثا کی تلاش سمیت مزید کاروائی کی جا رہی ہے نوجوان نے نا معلوم وجوہات پر گندم میں رکھنے والی گولیاں کھا لیں دوران علاج چل بسا پولیس ضروری قانونی کاروائی کے لئیے پہنچ گئی ورثا کا انکار۔شاہ جمال کے رہائشی محمد خالد کے جوان سال بیٹے عبدالخالق نے نا معلوم وجوہات پر گندم میں رکھنے والی گولیاں کھا لیں جسے تشویش ناک حالت میں رورل ہیلتھ سنٹر شاہجمال لایا گیا جو دوران طبی امداد ہسپتال میں دم توڑ گیا اطلاع ملنے پر ایس ایچ او تھانہ شاہ جمال ملک یونس اور ڈی ایس پی صدر سرکل مظفرگڑھ موقع پر پہنچ گئے اور ضروری قانونی کاروائی کے لئیے نعش کو قبضہ میں لینا چاہا تو ورثا نے یکسر انکار کرتے ہوئے نعش دینے سے انکار کر دیا جس پر پولیس نے نعش قبضہ میں لینے کی کوشش کی تو ورثا نے سخت مزاحمت شروع کر دی  دھکم پیل اور ہاتھا پائی تک نو بت جا پہنچی باوجود اس کے پولیس نعش کو  ڈسٹرکٹ ہسپتال مظفرگڑھ منتقل کر نے میں کامیاب ہو گئی۔تھانہ بستی ملوک کے علاقے 45سالہ شخص دم توڑگیا،پولیس نے نعش قبضے میں لیکر تفتیش شروع کردی ہے۔تفصیل کے مطابق چک نمبر387کارہائشی محمد اجمل اپنی موٹرسائیکل پر سوارہوکر گھرجارہاتھاکہ دنیاپورروڑ بستی ملوک کے قریب اچانک موٹرسائیکل سے نیچے گرااوربیہوش ہوگیااہل علاقہ نے ریسکیو1122کو اطلاع دی جہنوں نے موقع پر پہنچ کر شہری کو چیک کیاتو مردہ حالت میں پایاگیا،واقع کی اطلاع پر متعلقہ پولیس نے بھی پہنچ کر شہری کی نعش قبضے میں لیکر پوسٹ مارٹم کیلئے ہسپتال منتقل کردی گئی،پولیس کے مطابق موت کی وجہ ہارٹ اٹیک معلوم ہوئی تاہم اصل حقائق بعد ازاں تفتیش واضح ہوسکے گے تفتیش شروع کردی ہے۔کشمور حادثہ میں جاں بحق ٹھٹھہ صادق آباد کے نوجوان کی میت آبائی گاں پہنچ گئی، نماز جنازہ ادائیگی کے بعد سپرد خاک، تفصیل کے مطابق ٹھٹھہ صادق آباد کے نواحی چک نمبر 118 دس آر کا رہائشی 22 سالہ نوجوان محمد نوید جو کشمور میں محنت مزدوری کرتا تھا واپڈا کی مین لائن پر کام کرنے کے دوران کھمبا ٹوٹنے کے حادثہ میں جاں بحق ہوگیا تھا، متوفی محمد نوید کی میت گزشتہ روز آبائی گاں چک نمبر 118 دس آر لائی گئی جہاں نمازِ جنازہ ادایگی کے بعد متوفی نوجوان محمد نوید کو سپرد خاک کردیا گیا، نماز جنازہ میں سیاسی سماجی عوامی شخصیات کی بڑی تعداد نے شرکت کی، آہوں سسکیوں کے ساتھ محمد نوید کو سپرد خاک کردیا گیا۔

حادثات

مزید :

ملتان صفحہ آخر -