کم عمر بچی کی شادی،رخصتی سے پہلے چھاپہ،4افراد گرفتار

کم عمر بچی کی شادی،رخصتی سے پہلے چھاپہ،4افراد گرفتار

  

لودھرں (نمائندہ پاکستان) لودھراں  کے نواحی علاقے حویلی نصیرخاں میں مشتاق نامی شخص نے  بھاری رقم کے عوض 10 روز قبل  اپنی 13 سالہ بیٹی سدرہ کا نکاح 38 سالہ اظہر سے  کردیا تھااور  کل اتوار کے  روز  سدرہ کی رخصتی  کی جارہی تھی جو کہ اطلاع ملنے پر پولیس نے موقع پر پہنچ کر رکوادی اور 13 افراد سدرہ کے والد محمد مشتاق،دولہے محمد اظہر، محمد (بقیہ نمبر30صفحہ6پر)

اکرم نکاح رجسٹرار حویلی نصیر خان،رمضان  کالو، محمد ارشد، منظور احمد،محمد شان،محمدریاض،الطاف حسین،  صابرحسین،مسما امیر مائی اورمسما رضیہ بی بی کے خلاف چائلڈ میرج رسٹرینٹ ایکٹ 1929کے تحت مقدمہ درج کرکے دو خواتین سمیت  چار ملزمان کو گرفتار کرلیا ہے اس سلسلہ میں جب ایس ایچ او صدر مہر ریاض سے سوال کیا گیا کہ اب تو چائلڈ میرج رسٹرینٹ ایکٹ 2015 نافذ العمل ہوگیا ہیاور سزائیں بھی تبدیل ہوگئی ہیں  لیکن آپ نے 1929 کے ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کیا ہے تو ان کا کہنا تھا کہ پہلی ہی ضمنی میں 1929کا ایکٹ تبدیل کرکے 2015 والا ایکٹ لگا دیا جائے گا  پولیس کے مطابق  لڑکی کی والدہ،خالہ اور دو کزن کو گرفتار کرلیا ہے جبکہ  دولہا اور لڑکی کے والد سمیت دیگر ملزمان فرارہونے میں کامیاب ہوگئے ہیں جن کی گرفتاری کے لیے کوشش کی جارہی ہے۔

گرفتار

مزید :

ملتان صفحہ آخر -