ٹیکنالوجی کو فروغ دینے والی قومیں مضبوط ہیں،حسین محی الدین

    ٹیکنالوجی کو فروغ دینے والی قومیں مضبوط ہیں،حسین محی الدین

  

 لاہور (پ ر)منہاج یونیورسٹی لاہور میں سائنس اینڈ ٹیکنالوجی پر منعقدہ دوروزہ (ورچوئل) کانفرنس میں ڈپٹی چیئرمین بورڈ آف گورنرز منہاج یونیورسٹی لاہور ڈاکٹر حسین محی الدین قادری نے شرکاء سے کلیدی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جن قوموں نے اپنے تعلیمی نظام میں سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کو سرفہرست رکھاوہ آج نہ مضبوط اقوام بن کر ابھری ہیں۔Islamic Perspective on Human Migration to Space  " کے موضوع پر کانفرنس میں اپنا  تحقیقی مقالہ پیش کرتے ہوئے ڈاکٹر حسین محی الدین قادری نے کہا کہ سائنس اینڈ ٹیکنالوجی  میں تیزی سے ترقی کرتے ہوئے اس دور میں پاکستان کو بھی اپنی سالمیت کی مضبوطی کے لیے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی میں آگے بڑھنا ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے تعلیمی اداروں میں ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے علاوہ سیٹلائٹ ایجنسیوں کے لیے ریسرچ ورک اور اپنے سیٹلائٹ سسٹم کے لیے عملی طور پر اقدامات کرنا ہوں گے۔اپنے خطاب میں انہوں نے دوسرے سیاروں میں انسانی ہجرت کے پہلو کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ دور میں سائنس نے کائنات کی توسیع کا اعتراف کیا ہے جو کہ اس حقیقت کی نشاندہی کرتا ہے کہ کائنات میں ایسے سیارے موجود ہیں کہ جہاں انسانی آبادی زندہ رہ سکتی ہے۔اور اگر سپیس سائنس میں تیزی سے ترقی کا یہ عمل جاری رہا تووہ وقت دور نہیں جب انسان سیارہ مریخ کے علاوہ دوسرے سیاروں تک پہنچنے اور وہاں آباد ہونے میں کامیاب ہو جائے گا۔رجسٹرار منہاج یونیورسٹی لاہورڈ اکٹر خرم شہزاد نے کانفرنس کا مختصر تعارف پیش کرتے ہوئے کہا کہ کانفرنس کاانعقاد منہاج یونیورسٹی کی فیکلٹی آف بیسک سائنسز اینڈمیتھ اور فیکلٹی آف کمپیوٹر سائنسزاینڈ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے اشتراک سے کیاگیا۔انہوں نے شرکاء کو کانفرنس کے موضوع  "سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (ماضی،حال  اور مستقبل)اور ذیلی موضوعات کمپیوٹر سائنس،ریاضی،کیمسٹری،فزکس اینڈ بیالوجی کے حوالے سے بریف کیا۔وائس چانسلر منہاج یونیورسٹی لاہور پروفیسر ڈاکٹر ساجد محمود شہزاد نے کانفرنس کے افتتاحی سیشن میں شرکاء کو خوش آمدید کہا۔اپنے خطاب میں انہوں نے کہا کہ منہاج یونیورسٹی لاہور کی جانب سے منعقدہ ورچوئل کانفرنس کی صورت میں دنیا بھر کے محققین،ماہرین تعلیم اور طلبہ کو سائنسی تحقیق میں جدت لانے اور آگے بڑھنے کے لیے ایک کثیر الجہتی بین الاقوامی پلیٹ فارم مہیا کیا گیا ہے اور یہ پلیٹ فارم سائنس اینڈ ٹیکنالوجی میں مزید مباحثوں،خیالات اور افکار کی حوصلہ افزائی اور فروغ کے لئے ممد ومعاون ثابت ہوگا۔دو روزہ ورچوئل کانفرنس میں مجموعی طور پر 5 ٹیکنیکل سیشنز ہوئے جن میں قومی اور بین الاقوامی محققین کی جانب سے مجموعی طور پر 12 مقالے پیش کیے گئے۔ کانفرنس میں پاکستان سمیت امریکہ اومان،فرانس اور دیگر ممالک کے 839محققین اور طلبہ نے حصہ لیا۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -