انسداد تمباکو نوشی کا عالمی دن، ملتان سمیت مختلف  شہروں میں تقریبات، سیمینارز آگاہی واک

انسداد تمباکو نوشی کا عالمی دن، ملتان سمیت مختلف  شہروں میں تقریبات، ...

  

 ملتان، کوٹ ادو، کرم پور،صادق آباد(خصوصی رپورٹر، سٹی رپورٹر، تحصیل رپورٹر، نمائندہ پاکستان) عالمی یوم ترک تمباکو کے عالمی دن کے حوالے سے ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کے زیر اہتمام آگاہی سیمینار کا انعقاد گزشتہ روز سی ای او ہیلتھ ملتان ڈاکٹر شعیب ا(بقیہ نمبر36صفحہ6پر)

لرحمان گورمانی کی سربراہی میں ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی ملتان کے کمیٹی روم میں کیا گیا جس میں ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر پی ایس ڈاکٹر سید محمد علی مہدی، سمیت دیگر ڈاکٹروں  اور محکمہ صحت ملازمین نے کثیر تعداد میں شرکت کی اس حوالے سے ڈاکٹر شعیب الرحمان گورمانی اور ڈاکٹر سید علی مہدی نے تمباکو نوشی اور اس سے پیدا ہونے والی بیماریوں سے متعلق شرکا کو آگاہی فراہم کی اور ترک تمباکو کے حوالے سے بھرپور آگاہی مہم چلانے کے حوالے سے اہم فیصلے لئے گئے،جبکہ اس موقع پر سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر شعیب الرحمان گورمانی اور ڈاکٹر علی مہدی کا مزید کہنا تھا کہ تمباکو نوشی نہ صرف سگریٹ پینے والے کے لئے مضر ہے بلکہ سگریٹ نوشی کے ماحول میں رہنے والے افراد بھی اس کے مضر اثرات سے نہیں بچ سکتے اور کینسر سمیت سانس اور پھیپھڑوں کی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہو جاتے ہیں اسلئے سگریٹ نوشی سے مکمل پرہیز سے ہی بیماریوں سے بچا جا سکتا ہے بعدازاں سی ای او ہیلتھ دفتر سے کچہری چوک تک آگاہی واک کا انعقاد کیا گیا جس کے دوران شہریوں کو عالمی یوم ترک تمباکو کے حوالے سے آگاہی اور سگریٹ نوشی سے چھٹکارا حاصل کرنے سے متعلق معلوماتی پمفلٹ تقسیم کئے گئے پاکستان میں تمباکو نوشی کے خلاف قوانین پر سختی سے عملدرآمد کروانے کی ضرورت ہے پاکستان میں اس وقت روزانہ 12سو سے زائد بچے اور نوجوان تمباکو نوشی کا آغاز کرتے ہیں جو کہ ایک لمحہ فکریہ ہے ان خیالات کا اظہار معروف فیملی فزیشن وچیرمین صحت فا?نڈیشن مخدوم زادہ ڈاکٹر سید عبدالسمیع نے تمباکو نوشی کے خلاف عالمی دن کے موقع پر اللہ شافی چوک پر منعقدہ آگاہی واک کے شرکائسے خطاب کرتے ہوئے کیا انہو ں نے مزید کہا کہ عالمی اداروں کے اعداد وشمار کے مطابق پاکستان چائنہ کے بعد چند ان ممالک میں شامل ہے جہاں پوری دنیا میں سب سے زیادہ تمباکو نوشی کی جاتی ہے اور 40فی صد سے زائد افراد پاکستان میں تمباکو نوشی سے اموات کا شکار ہو جاتے ہیں پاکستان میں تمباکو نوشی کے خلاف قوانین پر سختی سے عملدرآمد کروانے کی ضرورت ہے پاکستان میں اس وقت روزانہ 12سو سے زائد بچے اور نوجوان تمباکو نوشی کا آغاز کرتے ہیں جو کہ ایک لمحہ فکریہ ہے ان خیالات کا اظہار معروف فیملی فزیشن وچیرمین صحت فانڈیشن مخدوم زادہ ڈاکٹر سید عبدالسمیع نے تمباکو نوشی کے خلاف عالمی دن کے موقع پر اللہ شافی چوک پر منعقدہ آگاہی واک کے شرکاسے خطاب کرتے ہوئے کیا انہو ں نے مزید کہا کہ عالمی اداروں کے اعداد وشمار کے مطابق پاکستان چائنہ کے بعد چند ان ممالک میں شامل ہے جہاں پوری دنیا میں سب سے زیادہ تمباکو نوشی کی جاتی ہے اور 40فی صد سے زائد افراد پاکستان میں تمباکو نوشی سے اموات کا شکار ہو جاتے ہیں جبکہ 3بلین روپے سے زائد سگریٹ نوشی میں اڑا دئیے جاتے ہیں اگر کسی گھر میں ایک فرد بھی سگریٹ نوشی کرتا ہے تو اسکے گھر کے تمام افراد خصوصی طور پر خواتین اور بچے سانس کی بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں آگاہی واک میں ڈاکٹر خلیل، عرفان قریشی، اعجاز حسین،وقاص رفیع،راحیل قادری،قاری عارف وزندگی کے تمام شعبہ ہائے سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی۔ملتان۔ صحت فاونڈیشن کے زیر اہتمام تمباکو نوشی کے خلاف عالمی دن کے موقع پر آگاہی واک کی قیادت ڈاکٹر سید عبدالسمیع کر رہے ہیں۔حلیمہ ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن پنجاب کے زیر اہتمام عالمی انسداد تمباکو نوشی کا عالمی دن منایا گیا، حلیمہ ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن پنجاب نے اس سلسلے میں ایک آگاہی واک کا انعقاد کیا جو کہ کچہری سے شروع ہو کر پریس کلب کوٹ ادو پر ختم ہوئی،واک میں سوشل ویلفیئر آفس کوٹ ادو کے عملہ نے بھی شرکت کی،حلیمہ ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن پنجاب کے نائب صدر محمد ساجد نے  ریلی سے خطاب میں حکومت وقت سے اپیل کی کہ سگریٹ نوشی کے خاتمے کے حکومت سگریٹ کی کم عمر بچوں کو فروخت کرنے پر پابندی لگائے اور سگریٹ سمیت دیگر مضر صحت اشیا پر بھاری ٹیکس لگائے جائیں، انہوں نے والدین سے اپیل کی کہ وہ بھی اپنے بچوں پر نظر رکھیں تاکہ اس سماجی برائی کا خاتمہ ممکن ہو سکے  رورل ہیلتھ سنٹر کرم پور اینٹی تمباکو ڈے کے حوالے سے منعقدہ سینمار سے خطا ب کرتے ہوئے میڈیکل آفیسر ڈاکٹر علی رضا چوہدری نے کہاکہ تمباکو نوشی انسانی زندگی کیلئے زہر قاتل ہے۔سگریٹ نشے کا گیٹ وے ہے مگر اسے نشہ ہی نہیں سمجھا جاتا مگر در حقیقت سگریٹ پینے سے دل،پھپھڑوں،کینسر اور دیگر بیماریاں پھیلتی ہیں۔ڈاکٹر ثانیہ نے کہاکہ سگریٹ نوشی میں مبتلا افراد میں کرونا وائرس حملہ آسانی سے ہو جاتا ہے۔ہم سب کی ذمہ داری ہے  تمباکو نوشی کے نقصان کے بارے آگاہی فراہم کریں۔تحصیل ہیڈ کوارٹر کے زیر اہتمام تمباکو نوشی کے خاتمہ کے حوالے سے ایک واک کا اہتمام کیاگیا جس میں ڈاکٹر ز، وکلا، صحافی برادری، سول سوسائٹی کے نمائندوں اور تمام مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی اس موقع پر واک میں شریک شرکا نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ تمباکونو شی کا استعمال ہمارے نوجوانوں کی بربادی کا سبب بنا ہوا ہے اس کی روک تھا م کیلئے موثر اور سنجیدہ حکمت عملی اپنانے کی ضرورت ہے جب تک تمباکو نوشی کا خاتمہ ممکن نہیں ہو جاتا اس وقت تک ہماری نوجوان نسل اس موذی مرض سے نجات حاصل نہیں کر سکتی اس سلسلہ میں تمام نمائندوں کو اپنا کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے تاکہ نوجوان نسل مزید تباہ ہونے سے بچ سکے۔

انسداد تمباکو

مزید :

ملتان صفحہ آخر -