جوم کام پچاس سال پہلے ہونے والے تھے ہم وہ اب کر رہے ہیں، آئندہ بجٹ میں عوام کو ریلیف فراہم کریں گے: عمران خان

 جوم کام پچاس سال پہلے ہونے والے تھے ہم وہ اب کر رہے ہیں، آئندہ بجٹ میں عوام ...

  

 اسلام آباد(سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ آئندہ بجٹ میں عوام کو ریلیف فراہم کریں گے۔وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت حکومتی اور پارٹی ترجمانوں کا اجلاس ہوا جس میں ملکی سیاسی اور معاشی صورتحال کا جائزہ لیا گیا جب کہ اس دوران بجٹ منظوری سمیت دیگر سیاسی امور پر بھی گفتگو کی گئی۔اجلاس میں ترجمانوں نے وزیراعظم کو معاشی اشاریوں میں بہتری پر مباکباد دی۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ معیشت درست سمت میں گامزن ہے، ترجمان معیشت میں بہتری سے متعلق عوام کو آگاہ کریں۔وزیراعظم عمران خان بجٹ میں عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کرنے کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آئندہ بجٹ میں عوام کو ریلیف فراہم کریں گے۔ وزیراعظم نے کہا ہے کہ جو چیزیں پچاس سال پہلے کرنا تھیں، اب کر رہے ہیں، پچھلے کئی برسوں میں ملک کیلئے کچھ نہیں کیا گیا، سب سے بڑی کمزوری عملدرآمد کی ہے، الیکشن سامنے رکھ کر منصوبہ بندی کریں گے تو ملک ترقی نہیں کرے گا، بھاشا اور مہمند ڈیم منصوبوں پر پیش رفت خوش آئند ہے۔پہلے گرین یورو  انڈس بانڈ  کے اجرا کی تقریب سے وزیراعظم عمران خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ منصوبوں پر عمل درآمد بہت سست روی کا شکار ہوتا ہے، ہم منصوبے شروع کر دیتے ہیں، عمل درآمد سست ہوتا ہے، مستقبل کیلئے آپ کو لمبی پلاننگ کرنا پڑتی ہے، ہمارے شہر آلودہ ہوچکے ہیں، لاہور زندہ مثال ہے، ماحول دوست بجلی کی پیداوار کیلئے 10 ڈیم بنا رہے ہیں، 2018 سے اب تک ایک ارب درخت لگائے ہیں، 2023 تک 10 ارب درخت ملک میں لگائیں گے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ جب ہم بڑے ہو رہے تھے ملک تیزی سے ترقی کر رہا تھا، بھارت میں کھیل کر واپس آکر لگتا تھا کسی غریب ملک سے امیر میں آگیا، بھارت بھی ہم سے آگے نکل گیا، پچھلے 30 سال میں بنگلا دیش بھی ہم سے آگے نکل گیا۔ انہوں نے کہا کہ ایجوکیشن سسٹم میں یکساں تعلیمی نصاب لا رہے ہیں، ہیلتھ کارڈ کے ذریعے کہیں سے بھی علاج کرایا جاسکتا ہے، یہ صرف ہیلتھ کارڈ نہیں پورا ہیلتھ سسٹم ہے۔   وزیر  اعظم نے کہا ہے کہ  ملک میں ٹیکنالوجی کا فروغ موجودہ حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے، حکومت کی جانب سے سرمایہ کاروں کو منافع بخش کاروباری سرگرمیوں کے لئے ہر ممکنہ سہولت دی جائے گی، اسلام آباد اسپیشل ٹیکنالوجی زون کے قیام  کو جلد از جلد مکمل کیا جائے۔وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اسپیشل ٹیکنالوجی زونز اتھارٹی بورڈ آف گورنرز کا دوسرا ا جلاس  ہو  ا۔جس میں اتھارٹی کو متحرک ادارہ بنانے خصوصا ٹیکنالوجی ٹرانسفر، ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ کے فروغ، بیرونی سرمایہ کاری میں اضافے، نوجوانوں کے نوکریوں کے مواقع پیدا کرنے اور آئی ٹی کے شعبے میں ملکی برآمدا ت میں اضافے کیلئے حوالے سے متحرک اور فعال ادارہ بنانے کے حوالے سے پیش رفت پیش کی گئی۔ اجلاس میں ایس ٹی زیڈ رولز2021کی منظوری دی گئی،وزیرِ اعظم کو اسلام آباد اسپیشل ٹیکنالوجی زون کے قیام کے حوالے سے پیش رفت پر بھی بریفنگ دی گئی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ معروف آئی ٹی کمپنیوں جن میں ہواوے، سام سنگ وغیرہ شامل ہیں کی جانب سے اس زون میں سرمایہ کاری کے حوالے سے خصوصی دلچسپی اور عزم کا اظہار کیا جا رہا ہے۔ اجلاس کو ملک کی رورل سیکٹرز میں اسپیشل ٹیکنالوجی زونز کے قیام، نوجوانوں کو تکنیکی اور پروفیشل ٹریننگ دینے کے حوالے سے مجوزہ انسٹیٹیوٹ، نوجوانوں کی صلاحیتیوں میں اضافے کے حوالے سے تربیت اور نوکریوں کے مواقع پیدا کرنے کے حوالے سے حکمت عملی پر بھی تفصیلی بریفنگ  دی گئی۔ اس موقع پر وزیرِ اعظم نے اتھارٹی کی جانب سے کی جانے والی پیش رفت کو سراہتے ہوئے کہا کہ ملک میں ٹیکنالوجی کا فروغ موجودہ حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔ انہوں نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ حکومت کی جانب سے سرمایہ کاروں کو منافع بخش کاروباری سرگرمیوں کے لئے ہر ممکنہ سہولت دی جائے گی۔وزیرِ اعظم نے ہدایت کی کہ اسلام آباد اسپیشل ٹیکنالوجی زون کے قیام  کو جلد از جلد مکمل کیا جائے۔

عمران خان

مزید :

صفحہ اول -