پشاور،فپواسا کا آج سے قلم چھوڑ ہڑتال کا اعلان

    پشاور،فپواسا کا آج سے قلم چھوڑ ہڑتال کا اعلان

  

پشاور(سٹی رپورٹر)پبلک سیکٹر یونیورسٹیز کے اساتذہ اور ملازمین پر پولیس کی جانب سے لاٹھی چارج کے خلاف فپواسا کے ایگز یکیٹیو ممبران اور دیگر ملازمین نے آج سے صوبے بھر کے یونیورسٹیز  میں قلم چھوڑ ہڑتال کا اعلان کرتے ہوئے  حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ تمام گرفتار عہدیداران کو فوری رہا کیا جائے،  ڈاکٹر عطاء الرحمن کو فوری سرچ کمیٹی سے ہٹایا جائے،یونیورسٹیز کا فنڈ بڑھایا جائے اور صوبے میں سندھ اور پنجاب کی طرح صوبائی ایچ سی قائم کی جائے جبکہ الاونسز کے حوالے سے ہائیر ایجوکیشن ڈپارٹمنٹ کی جانب سے جاری خط فوری واپس لیا جائے جائے اور صوبائی حکومت یونیورسٹیز میں بے جاں مداکلت فوری بند کریں  بصورت دیگر احتجاج کا دائر ہ کار وسیع کرینگے پشاور پریس کلب میں  پشاور یونیورسٹی ٹیچرز ایسو سی ایشن کے صدر اور فپواسا کے عہدیدار ڈاکٹر فضل ناصر نے دیگر ملازمین اور اساتذہ کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پچھلے پانچ دنوں سے یونیورسٹی میں پر امن احتجاج کیا اور ایک پودا تک نہیں گھرایا اور اسمبلی کے باہر بھی پر امن احتجاج ریکارڈ کرنے ائے تھے تاہم پولیس نے پر امن مظاہرین پر طاقت کا بے دریغ استعمال کر کے قوم کے معمران پر لاٹھی چار اور انسو گیس کی شیلنگ کی جسکی جتنی مذمت کی جائے کم ہے جبکہ خیبر پختونخوا کے مثالی پولیس نے فپواسا کے صدر پروفیسر ڈاکٹر شاہ عالم اور دیگر ملازمین تنظیموں کے عہدیداران اور صدور کو گرفتار کیا جو سرا سر اسر نا انصافی ہے اور  حکومت کی سنگین غلطی قرار دی انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ گرفتار عہدیداران اور ملازمین کو فوری رہا کیا جائے،تمام وائس چانسلر ز کو ہٹایا جائے،صوبائی ایچ سی کا قیام عمل میں لایا جائے،صوبے کے یونویرسٹیوں کا فنڈ بڑ ھایا جائے،یونیورسٹیز میں بے جاں مداخلت بند کی جائے،الاونسز کی کٹوتی کے حوالے سے جاری صوبائی خط واپس لیا جائے طلبہ کے فیسوں میں اجافہ فوری واپس لیا جائے، 25 فیصد  ڈسپنسری الاونس کا اجراء فوری کیا جائے  اور آج سے صوبے بھر کے یونیورسٹیز میں قلم چھوڑ ہڑتال کا اعلان کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ مطالبات کی منظوری تک ہڑتال جاری رہے گا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -