شبقدر، فارمیسی شاپ سے اسلحہ کی نوک پر ڈکیتی 

شبقدر، فارمیسی شاپ سے اسلحہ کی نوک پر ڈکیتی 

  

 شبقدر (نمائندہ خصوصی)شبقدر بازار میں ڈکیتی کی واردات۔ ڈاکوں نے اسلحہ کی نوک پر  فارمیسی کی دوکان سے چھ لاکھ روپے نقد۔ 3 موبائل فونز اور دو پستول لے کر فرار۔ شبقدر پولیس موقع پر پہنچ گئی ڈاکوں کی گرفتاری کے لئے علاقے میں کاروائی شروع کر دی۔ ڈکیتی واردات کے خلاف شبقدر کیمسٹ اینڈ ڈرگسٹ ایسوسی ایشن اور تاجر تنظیموں کے عہدیداروں کا مشترکہ پریس کانفرنس۔ ڈکیتوں کو جلد از جلد گرفتار کرکے قانون کے کٹہرے میں کھڑا کرکے سخت سزا دی جائے بصورت دیگر اختجاجی مظاہرہ کرکے دوکانوں کو تالے لگائینگے پولیس کے اعلی حکام تاجروں اور دوکانداروں کو جان و مال کا  تحفظ فراہم کرے تفصیلات کیمطابق شبقدر بازار میں گزشتہ رات 10 بجے مچنی روڈ پر واقع شبقدر فارمیسی کی دوکان کے اندر 4 ڈاکوں داخل ہو گئے اور فورا مالک دوکان کو اسلحہ کی نوک پر سائیڈ پر کھڑا کرکے دوکان میں موجود چھ لاکھ روپے نقد حفاظت کے لیے رکھا گیا پستول تین موبائل فونز جبکہ ڈاکووں نے موقع پر موجود چوکیدار سے بھی پستول لے کر فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے شبقدر پولیس موقع پر پہنچ گئی ڈاکوں کی گرفتاری کے لئے فورا علاقہ بھر میں کاروائی شروع کر دی تاحال ڈاکوں کو گرفتار نہ کر سکے جبکہ مالک دوکان زبیر احمد ساکن شبقدر بازار نے تھانہ شبقدر میں ایف آئی آر درج کر دی ہیں ڈکیتی کی واردات کے خلاف شبقدر بازار تاجر برادری کے صدر سید شبیر احمد شاہ باچا۔  اور کیمسٹ اینڈ ڈرگسٹ ایسوسی ایشن شبقدر بازار کے عہدیداروں حاجی جان سید خان حاجی عرب شیر خان اور دیگر شبقدر میڈیا سنٹر میں مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ شبقدر بازار میں ڈکیتی واردات کی مذمت کرتے ہیں شبقدر پولیس کی بروقت کاروائی کو سراہتے ہیں لیکن ڈاکوں کی گرفتاری کے لئے کاروائیاں جاری رکھنے کا پر زور مطالبہ کرتے ہیں  انہوں نے کہا کہ شبقدر بازار میں عرصہ دراز سے شام ہوتے ہی  پولیس گشت ختم کر دیا گیا ہے اس لئے ڈاکووں نے دیدہ دلیری سے سر شام بھرے بازار میں فارمیسی کی دوکان پر ڈاکہ ڈالا تاجروں اور دوکانداروں نے حکومت اور محکمہ پولیس کے اعلی حکام سے پر زور مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ شبقدر بازار میں پولیس نفری بڑھا کر شام سے لیکر صبح تک پولیس گشت کرکے تاجر برادری اور دوکانداروں کو جان و مال کی تحفظ فراہم کیا جائے بصورت دیگر شبقدر بازار کے تمام تاجرتنظیمیں احجاجا بازار اور مارکیٹوں کو بند کرکے احتجاجی مظاہرے شروع کرینگے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -