اغواء برائے بداخلاقی،چوری کا مقدمہ خارج کرنے کا حکم کالعدم

 اغواء برائے بداخلاقی،چوری کا مقدمہ خارج کرنے کا حکم کالعدم

  

 لاہور(نامہ نگار)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس محمدشان گل نے اغواء برائے بداخلاقی اور چوری کا مقدمہ خارج کرنے کا حکم کالعدم کرتے ہوئے تحریری فیصلہ جاری کردیا عدالت نے درخواست گزار شہزاداں مائی کی درخواست پر 14 صفحات پرمشتمل  اپناتحریری فیصلہ جاری کرتے ہوئے یہ فیصلہ ڈی پی او جھنگ کو بھی بھجوانے کا حکم دیا  درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیارکررکھا تھا کہ گڑھ مہاراجہ پولیس نے جنوری میں درخواست گزار کی مدعیت میں ملزم ثقلین عباس کے خلاف  اغواء کا مقدمہ درج کیا، درخواست گزار کے مقدمہ کی تفتیش سے مطمئن نہ ہونے پر متعلقہ ڈی پی او نے دوبارہ تفتیش کا حکم دیا، مقدمہ کے تفتیشی افسر غضنفر عباس نے ملزم ثقلین عباس کو الزامات سے بری الذمہ قرار دے دیا تفتیشی افسر نے ملزم سے ساز باز کر کے علاقہ مجسٹریٹ سے مقدمہ خارج کرنے کا حکم بھی حاصل کر لیا،عدالت سے استدعاہے کہ اغوا ء برائے بداخلاقی کا مقدمہ خارج کرنے کا حکم غیر قانونی قرر دے کراسے کالعدم کیا جائے،عدالت نے ڈی پی او جھنگ کو عدالتی فیصلے کی روشنی میں مقدمہ کی دوبارہ تفتیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے قرار دیا کہ ڈی پی او جھنگ یقینی بنائے کہ مقدمہ کی تفتیش قانون کے مطابق کی جائے تفتیشی افسر اور ڈی پی او جھنگ آفس کے درمیان رابطے کا فقدان تشویشناک ہے،مقدمہ کے تفتیشی افسر نے ملزم کی ملی بھگت سے علاقہ مجسٹریٹ کے سامنے حقائق چھپائے،تفتیشی افسر نے اغوا برائے بداخلاقی کے مقدمہ کی تفتیش تبدیلی سے متعلق عدالت کو آگاہ نہیں کیا، تفتیشی افسر نے مقدمہ کی تفتیش تبدیلی سے متعلق پراسکیوٹر کو بھی آگاہ نہیں کیا اور مقدمہ خارج کروایا،عدالت کے استفسار پر مقدمہ کے تفتیشی افسر نے بہانہ لگایا اور بتایا کہ وہ مقدمہ کی پہلی تفتیش کی تبدیلی سے آگاہ نہیں تھا۔

کالعدم 

مزید :

صفحہ آخر -