ارسا نے سندھ حکومت پر بڑا الزام عائد کردیا

ارسا نے سندھ حکومت پر بڑا الزام عائد کردیا
ارسا نے سندھ حکومت پر بڑا الزام عائد کردیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )انڈس ریور سسٹم اتھارٹی (ارسا) کا کہنا ہے کہ  محکمہ آب پاشی سندھ نے پانی کی شدید کمی کے دنوں میں گدو بیراج سے پانی چھوڑنے کی بجائے جمع کیا اور پانی کی کمی کا شور مچاتے رہے۔ 

تفصیلات کے مطابق ملک میں پانی کی صورتحال کے حوالے سے ارسا کا اجلاس ہوا ۔ اجلاس میں  بتایا گیا کہ دریاؤں میں پانی کی آمد میں 23500 کیوسک کا اضافہ ہوا جس کے نتیجے میں آج پانی کی کمی صوبہ سندھ اور پنجاب کے لئے صرف 13 فی صد رہ گئی جو گزشتہ روز 18فی صد تھی۔پنجاب کا حصہ ایک لاکھ ایک ہزار کیوسک سے بڑھا کر ایک لاکھ سات ہزار کیوسک کر دیا گیا، پنجاب کو 6 ہزار کیوسک اضافی پانی مہیا کیا گیا۔سندھ کا حصہ ایک لاکھ نو ہزار کیوسک سے بڑھا کر ایک لاکھ پندرہ ہزار کیوسک کر دیا گیا اس طرح سندھ کو 6 ہزار کیوسک اضافی پانی مہیا کیا گیا۔

ارسا حکام کے مطابق درحقیقت سندھ میں پانی کی کمی نہیں تھی بلکہ غلط رپورٹنگ تھی۔ اسی مس رپورٹنگ کی بنا پر تونسہ اور گدو کے درمیان پانی کا اتنا زیادہ ضیاع دیکھنے میں آیا، ارسا نے اس حوالے سے سندھ سے جواب طلب کرلیا۔سندھ حکومت کی جانب سے  28 میں سے صرف 4 دن ایسے تھے جب ارسا کو صحیح اطلاع دی گئی۔ اس دوران گدو بیراج کا پونڈ لیول 245.2 فٹ سے بڑھا کر 254 فٹ پر لے آئے، دوسری طرف پانی کی کمی کا شور مچاتے رہے۔ ارسا نے سندھ کی جانب سے مس رپورٹنگ اور پانی جمع کرنے کے حوالے سے تفصیلی جواب طلب کرلیا۔

مزید :

قومی -