حکومت نے مدارس کے نئے بورڈز بنا کر مذہبی یکجہتی کو نقصان پہنچایا، سینیٹر حافظ عبدالکریم ‎

حکومت نے مدارس کے نئے بورڈز بنا کر مذہبی یکجہتی کو نقصان پہنچایا، سینیٹر ...
حکومت نے مدارس کے نئے بورڈز بنا کر مذہبی یکجہتی کو نقصان پہنچایا، سینیٹر حافظ عبدالکریم ‎

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے ناظم اعلیٰ سینیٹر ڈاکٹر حافظ عبدالکریم نے کہا ہے کہ حکومت نے مدارس کے نئے بورڈز بنا کر مذہبی یکجہتی کو نقصان پہنچایا، حکومت نے دینی مدارس میں دراڑیں پیدا کرنے کی کوشش کی، ہم اس فیصلے کو مسترد کرتے ہیں، پرانے وفاقوں میں کسی مدرسے کی رجسٹریشن میں کوئی رکاوٹ نہیں تھی۔ یہ فیصلہ سیاسی ہے جس کا مقصد مدارس کی قوت کو تقسیم کرنا ہے۔ نئے بورڈز کا حال بھی وہی ہوگا جو مشرف کے مدرسہ بورڈ کا ہوا تھا۔ ہم اپنے مدراس کا تحفظ کریں گے۔  ان خیالات کا اظہار انہوں نے کلیہ القرآن والتربیہ الاسلامیہ میں سعودی جامعات  کے گریجوایٹس اور پی ایچ ڈی ڈاکٹر حضرات کے اجتماع سے خظاب کرتے ہوئے کیا۔

 پروگرام کے میزبان قاری صہیب میرمحمدی تھے جبکہ صدارت حافظ مسعود عالم نے کی۔ مقررین میں ڈاکٹر عبیدالرحمان محسن، پروفیسر یاسین ظفر، مولانا عبدالستار حماد شامل تھے۔  قاری عزیز احمد، قاری ادریس عاصم،ڈاکٹر حماد لکھوی، حافظ محمد شریف،سیدضیا اللہ شاہ بخاری، مولانا نجیب اللہ طارق،ڈاکٹر نصیر اختر،ڈاکٹر طاہر محمود سمیت  ملک بھر کے جید سکالرز نے بھی شرکت کی۔

اجتماع سے سعودی جامعات کے فاضلین نے اپنے خطاب میں کہا کہ سعودی عرب کے خلاف منفی پراپیگنڈا مہم جاری ہے جو قابل مذمت ہے۔ سعودی عرب میں اعتدال کی پالیسیوں کو تقویت مل رہی ہے۔ امریکی رپورٹ سے پاکستان اور سعودی عرب کے تعلقات پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ عالم اسلام میں سعودی عرب اور اس کی قیادت سے محبت اور احترام پر کوئی سمجھوتہ ممکن نہیں ہے۔ 

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -