لندن میں سکھوں کی مذہبی عدالت قائم ،30 مجسٹریٹس اور 15 ججوں پر مشتمل ہو گی

لندن میں سکھوں کی مذہبی عدالت قائم ،30 مجسٹریٹس اور 15 ججوں پر مشتمل ہو گی
لندن میں سکھوں کی مذہبی عدالت قائم ،30 مجسٹریٹس اور 15 ججوں پر مشتمل ہو گی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لندن (ڈیلی پاکستان آن لائن )لندن میں آج سے سکھوں کی مذہبی عدالت کا قیام عمل میں آگیا۔
مقامی میڈیا کے مطابق سکھ مذہبی عدالت 30 مجسٹریٹس اور 15 ججوں پر مشتمل ہو گی، سکھوں کی مذہبی عدالت اپنے مذہبی اصول اور روایات سامنے رکھ کر فیصلے سنائے گی۔سکھوں کی مذہبی عدالت میں خواتین، بچوں اوردیگرتنازعات پر مذہبی عقائد کے مطابق فیصلے ہوں گے۔سکھ کورٹ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ سکھ خواتین، بچوں پر گھریلو تشدد، طلاق اور دیگر مسائل بہتر انداز میں حل ہو سکیں گے۔دوسری جانب پراگنا پٹیل فاونڈر آف ساوتھ آل بلیک سسٹرز نے کہا کہ سکھ کورٹ کا قیام مذہبی بنیاد پرستی کو ہوا دے گا۔برطانیہ میں یہودی مذہبی عدالتیں اور اسلامی شریعہ کونسل، مسلم مصالحتی ٹربیونل کام کر رہے ہیں۔

مزید :

برطانیہ -