بحر مردار کینال پروجیکٹ مسئلہ فلسطین کیلئے تباہ کن ثابت ہو گا، ماہرین

بحر مردار کینال پروجیکٹ مسئلہ فلسطین کیلئے تباہ کن ثابت ہو گا، ماہرین

  

 قاہرہ (این این آئی) اردن اور اسرائیل کے درمیان بحر مردار اور بحر احمر کوباہم مربوط کرنے اور پانی کی تقسیم کے ایک نئے معاہدے کے مضمرات پرماہرین نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے بحر مردار کینال پروجیکٹ کو مسئلہ فلسطین کیلئے نہایت خطرناک قرار دیا ہے۔ دفاعی امور کے ماہر مصری تجزیہ نگار میجر جنرل عاد سلیمان نے ایک بیان میں کہا کہ بحر مردار کینال پروجیکٹ سے مسئلہ فلسطین تباہ ہو کر رہ جائیگا۔ یہ منصوبہ فلسطینیوں اور اردن کے مشترکہ دشمن صہیونیوں کو ایک نئی زندگی فراہم کریگا جبکہ اس کے بدلے میں اردن اور فلسطینیوں کو کچھ بھی حاصل نہیں ہوگا۔جمعرات کو اسرائیل اور اردن نے بحر مردار اور بحر احمر کو ایک کینال کے ذریعے باہم مربوط کرنے کے معاہدے پرعمل درآمد کا فیصلہ کیا گیا تھا ،معاہدے کے تحت فلسطینی اتھارٹی کو بھی شامل کیا گیا ہے۔ پانی تقسیم میں پہلا حصہ اردن کا، دوسرا اسرائیل اور تیسرا فلسطینی اتھارٹی کا ہو گا۔مصری تجزیہ نگار کا کہنا ہے کہ مشرق وسطیٰ اس وقت تبدیلی کے ایک نئے دور سے گزر رہا ہے۔ ایسے میں اسرائیل کی مدد سے بحر مردار اور بحر احمر کو ایک نہر کے ذریعے مربوط کرنا اردن اور فلسطینیوں کے مفاد میں نہیں البتہ اس سے اسرائیل کو فائدہ پہنچے گا۔ اس کے مضمرات اس قدر خطرناک ہیں کہ اس معاہدے پرعمل درآمد کی صورت میں مسئلہ فلسطین ختم ہو کر رہ جائیگا۔

مزید :

عالمی منظر -