شام میں غیر ملکی جنگجوؤں کی تعداد بڑھ کر 20 ہزار ہو گئی

شام میں غیر ملکی جنگجوؤں کی تعداد بڑھ کر 20 ہزار ہو گئی

  

 واشنگٹن( اظہر زمان، بیورو چیف) شام اور عراق میں جنگ لڑنے اور دہشت گردی پھیلانے والے داعش یا خود ساختہ’’ اسلامی مملکت‘‘ کے افراد کی کل تعداد31 ہزار ہے جن میں دنیا بھر سے آنے والے20 ہزار جنگجو شامل ہیں امریکہ کے انٹیلی جنس حکام کی تازہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ دنیا بھر سے آنے والے جنگجوؤں کی یہ تعداد گذشتہ موسم خزاں میں 16 ہزار تھی جس میں اب چار ہزار کا اضافہ ہو چکا ہے۔ مغربی ممالک اور امریکہ کے لئے زیادہ تشویش کی بات یہ ہے کہ صرف ان ممالک سے شام پہنچنے والے جنگجوؤں کی تعداد3400تک پہنچ گئی ہے جو نومبر میں 2700 تھی۔ انٹیلی جنس حکام کا خیال ہے کہ ہو سکتا ہے کہ مزید جنگجو نہ آئے ہوں اور صحیح انٹیلی جنس کی وجہ سے زیادہ درست تخمینہ لگایا گیا ہو۔ تاہم ان حکام کو یقین ہے کہ جس انداز سے کرد اور عراقی فوجیں داعش کے خلاف کامیابیاں حاصل کر رہی ہیں اس سے غیر ملکی جنگجوؤں کی آمد کا سلسلہ رک جائے گا یا کم ہو جائے گا۔ امریکی انٹیلی جنس حکام کے مطابق امریکہ سے شام پہنچنے والے امریکی باشندوں کی تعداد تقریباً180 ہے۔ امریکی حکام کے مطابق داعش کے ساتھ جنگ میں شرکت کے لئے نوے ممالک سے جنگجو شام آئے ہیں جن میں زیادہ تر وسطی ایشیا، بوسنیا اور چین کے ایک صوبے سے تعلق رکھتے ہیں

مزید :

صفحہ اول -