کلاس فیلو ہندو لڑکیوں کے ساتھ تصویر بنوانے پر مسلم نوجوان پر تشدد

کلاس فیلو ہندو لڑکیوں کے ساتھ تصویر بنوانے پر مسلم نوجوان پر تشدد
 کلاس فیلو ہندو لڑکیوں کے ساتھ تصویر بنوانے پر مسلم نوجوان پر تشدد

  

نئی دہلی(این این آئی) 20 سالہ مسلم لڑکے کو کلاس کی ہندو لڑکیوں کے ساتھ تصویر کھنچوانے پر جنوبی ریاست منگلور میں بری طرح تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق تصویر واٹس ایپ پر وائرل ہوگئی جس میں لڑکے کو اپنی کلاس کی پانچ لڑکیوں کی گود میں لیٹا دیکھا گیا۔ انڈین ایکسپریس کی رپورٹ کے مطابق محمد ریاض کو مقامی گینگ نے اکیلے لے جا کر بری طرح تشدد کا نشانہ بنایا۔ رپورٹ میں اسسٹنٹ کمشنر پولیس روی کمار کے حوالے سے بتایا گیا کہ تصویر کے گردش کرنے کے بعد گینگ نے ریاض کی تلاش شروع کردی تھی اور جب انہیں پتہ چلا کے وہ مسلمان ہے، اس پر حملہ کر دیا ان کا علاج ایک نجی ہسپتال میں جاری ہے۔ ریاض کمپوٹر سائنس کے طالب علم ہےں۔ریاض کے مطابق انہیں اپنے گھر کے قریب سے اغوا کیا گیا تھا، وہ اپنے دوستوں کے ساتھ تھے۔ انہوں نے بتایا کہ انہیں ایک نامعلوم مقام پر لے جاکر گینگ نے لاٹھیوں سے بری طرح مارا۔ ریاض کے والد کی شکایت پر پولیس نے اغوا اور اقدام قتل کا مقدمہ درج کرلیا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -