حکومت علاقائی ممالک کے ساتھ آزادانہ تجارتی معاہدے کرے: لاہورچیمبر

حکومت علاقائی ممالک کے ساتھ آزادانہ تجارتی معاہدے کرے: لاہورچیمبر

لاہور (کامرس رپورٹر) لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر شیخ محمد ارشد اور نائب صدر ناصر سعید نے حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ علاقائی ممالک، وسطیٰ ایشیائی ریاستوں، مشرقِ وسطیٰ اور افریقی ممالک کے ساتھ آزادانہ تجارت کے زیادہ سے زیادہ معاہدے کرے تاکہ ملکی برآمدات کو فروغ دیا جاسکے، وسائل اور صلاحیتوں سے مالامال ہونے کے باوجود پاکستانی برآمدات کا غیرتسلی بخش سطح پر رہنا تشویشناک ہے۔ ایک بیان میں لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر اور نائب صدر نے کہا کہ 60کی دہائی میں ہمیں بطور رول ماڈل اپنانے والے ممالک کی برآمدات آج ہم سے کئی گنا زیادہ ہوچکی ہیں لہذا حالات کے پیش نظر روایتی طریقوں سے ہٹ کر غیرمعمولی اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے کیونکہ ہر قسم کے وسائل سے مالامال ہونے کے باوجود ملکی برآمدات کے لیے مقررہ چھوٹا سا ہدف پورا کرنے میں بھی شدید مشکلا تکا سامنا رہتا ہے۔ شیخ محمد ارشد اور ناصر سعید نے کہا کہ زیادہ سے زیادہ ممالک کے ساتھ آزادانہ تجارت کے معاہدے کرکے اور موجودہ معاہدوں کو پوری طرح فعال کرکے پاکستان کی برآمدات کو فروغ دیا جاسکتا ہے۔

لاہور چیمبر کے عہدیداروں نے تجارت کے لیے نئی مصنوعات متعارف کرانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی برآمدات کم سطح پر رہنے کی ایک بڑی وجہ روایتی مصنوعات پر انحصار بھی ہے، غیرملکی خریداروں کو راغب کرنے کے لیے ہمیں تجارت کے قابل نئی اشیاء متعارف کرانا ہونگی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی مصنوعات معیار کے حوالے سے بہترین اور دنیا بھر کی غیر روایتی منڈیوں میں باآسانی اپنی جگہ بناسکتی ہیں۔ شیخ محمد ارشد اور ناصر سعید نے برآمد کنندگان پر زور دیا کہ وہ برانڈنگ اور ویلیوایڈیشن کی جانب خاص توجہ دیں ۔ انہوں نے کہا کہ مصنوعات کی ویلیو ایڈیشن کرکے کئی گنا زیادہ فائدہ حاصل کیا جاسکتا ہے جبکہ بین الاقوامی منڈی میں خریدار برانڈ شدہ مصنوعات کو زیادہ اہمیت دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ برآمد کنندگان کو علاقائی تجارت کے فروغ پر بھی توجہ دینی چاہیے کیونکہ اس سے انہیں دور دراز ممالک کی نسبت زیادہ فائدہ ہوسکتا ہے۔

 

مزید : کامرس