باچا خان یونیورسٹی پر حملہ بزدل دشمن کی گھٹیا حرکت ہے ، میاں افتخار

باچا خان یونیورسٹی پر حملہ بزدل دشمن کی گھٹیا حرکت ہے ، میاں افتخار

چارسدہ (بیورورپورٹ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہاہے کہ باچا خان یونیورسٹی پر حملہ بزدل دشمن کی گھٹیا حرکت ہے ۔ مرکزی اور صوبائی حکومتوں نے شہداء اور زحمیوں کے قربانیوں توجہ نہ دیکر پختون قوم کی احساس کمتری میں اضافہ کر دیا ہے ۔ تعلیمی اداروں کی ترویج و ترقی کیلئے تمام کو ششیں اور قربانیاں بروئے کار لائینگے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سانحہ با چا خان یونیورسٹی میں چہلم کے موقع پر میڈیا سے بات چیت کر تے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہاکہ دہشت گرد تعلیمی اداروں میں دہشت گردی سے ثابت کرنا چاہتے ہیں کہ حکومت ناکام ہیں لیکن حکومت کو متاثرہ تعلیمی اداروں کو اہمیت دینا چاہیے تاکہ دہشت گرد اور دہشت گرد سوچ کو مایوسی اور ناکامی کا سامنا کرنا پڑے۔ انہوں نے کہاکہ شہداء کا ایک وسیع سلسلہ ہے ہم جوانمردی سے موجودہ حالات کا مقابلہ کرتے رہے ہیں اور ثابت کرتے ہیں کہ ہمیں اپنے بچوں اور پیاروں کے نعشوں کے اُٹھانے سے نہ دبایا جا سکتا ہے اور نہ ڈرایا جا سکتاہے ۔ہم جرات اور استقامت سے دہشت گردی کا مقابلہ کرتے رہے ہیں۔ انہوں نے وزیر ستان میں جاری اپریشن کو کامیاب قرار دیتے ہوئے کہاکہ اپریشن کے تکمیل پر ملک کے دیگر حصوں میں بھی دہشت گردی کے خاتمے کیلئے اقدامات اُٹھانے چاہیے ۔ انہوں نے گزشتہ دنوں اپریشن کے دوران شہید ہونے والے کپٹن عمر اور ان کے دیگر ساتھیوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہاکہ ہمارا فوج ، پولیس ، لیویز ، ایف سی ،عوام اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے جوان اپنے خون کے نذرانے دیکر قوم کے مستقبل کو محفوظ بنارہے ہیں۔ حکومت او ر عوام کو ان قربانیوں کا اخترام کرنا چاہیے۔ میاں افتخار حسین نے کہاکہ صدر پاکستان ، وزیر اعظم خو د متاثرہ یونیورسٹی تشریف لا کر طلبہ کی داد رسی اور شہداء کے مقام کو خراج تحسین پیش کریں ۔

مزید : پشاورصفحہ اول