این اے 125 انتخابی عذرداری، سپریم کورٹ نے حامد خان کی ووٹوں کی تصدیق کا خرچہ سرکارسے لینے کی استدعا مسترد کردی

این اے 125 انتخابی عذرداری، سپریم کورٹ نے حامد خان کی ووٹوں کی تصدیق کا خرچہ ...
این اے 125 انتخابی عذرداری، سپریم کورٹ نے حامد خان کی ووٹوں کی تصدیق کا خرچہ سرکارسے لینے کی استدعا مسترد کردی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)این اے 125 سے متعلق انتخابی عذرداری کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے تحریک انصاف کے حامد خان کی ووٹوں کی تصدیق کا خرچہ سرکارسے لینے کی استدعا مسترد کردی۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ نے 26 جنوری کو نادرا کو ووٹوں کی تصدیق کا حکم دیتے ہوئے 3 ماہ میں رپورٹ طلب کی تھی جس پر نادرا نے پی ٹی آئی کے حامد خان سے خرچہ طلب کیا۔ حامد خان نے عدالت سے استدعا کی کہ ووٹوں کی تصدیق کا خرچہ سرکارسے لیا جائے جس پرجسٹس عظمت سعید شیخ نے استفسار کیا کہ نادرا کتنی رقم مانگ رہاہے ؟ ۔ حامد خان نے بتایا کہ نادر ا کی طرف سے 2 لاکھ مواد کی نقل و حمل اور لاکھوں روپے ووٹوں کی تصدیق کیلئے ما نگے جا رہے ہیں جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ اگر آپ خرچہ برداشت نہیں کر سکتے تو آرڈر واپس لے کرکیس چلائیں گے۔ عدالت نے حامد خان کی ووٹوں کی تصدیق کا خرچہ سرکارسے لینے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے کہا کہ حامد خان 4 ہفتوں میں نادراکو ووٹوں کی تصدیق کی رقم جمع کروائیں اوراگر چار ہفتوں میں رقم جمع نہ کروائی گئی تو اپیل دوبارہ سماعت کے لیے مقرر ہو گی۔

مزید : قومی /اہم خبریں