ہائی کورٹ نے دریائے چناب میں فیکٹریوں کا آلودہ پانی پھینکنے پر سیکرٹری ماحولیات سے جواب طلب کرلیا

ہائی کورٹ نے دریائے چناب میں فیکٹریوں کا آلودہ پانی پھینکنے پر سیکرٹری ...
ہائی کورٹ نے دریائے چناب میں فیکٹریوں کا آلودہ پانی پھینکنے پر سیکرٹری ماحولیات سے جواب طلب کرلیا

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )دریائے چناب میں فیکٹریوں کا گندہ پانی پھینکنے کا اقدام لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا گیا، مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے اس سلسلے میں دائر ہارون ملک کی درخواست پر سیکرٹری محکمہ ماحولیات سے جواب طلب کر لیاہے۔درخواست گزار کی طرف سے ثمرہ ملک اور چودھری نصیر ایڈووکیٹس نے موقف اختیار کیا کہ حکومت نے ماحولیاتی قوانین کے خلاف دریائے چناب پر ڈسپوزل اسٹیشن نصب کیا ہے جس کے ذریعے فیکٹریوں اور سیوریج کا گندہ پانی ٹریٹمنٹ کے بغیر دریا میں پھینکا جا رہا ہے، گندے پانی کہ وجہ سے مچھلیوں سمیت دیگر آبی حیات کی زندگی متاثر ہو رہی ہے جبکہ دریائے چناب بھی آلودہ ہو رہا ہے، انہوں نے استدعا کی کہ حکومت کو دریائے چناب میں گندہ پانی پھینکنے سے روکا جائے، عدالت نے سیکرٹری ماحولیات کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 25مارچ تک تفصیلی جواب طلب کر لیا ہے۔

مزید : لاہور