’میری بہن شادی شدہ تھی لیکن نوجوان کیساتھ تعلقات استوار کرلیے جس سے حاملہ ہوگئی‘‘ ملزم کے اعتراف پر20 سالہ لڑکی کی قبرکشائی، ڈاکٹروں نے لاش دیکھ کر ایسی بات بتادی کہ کوئی بھی گھبراجائے

01 مارچ 2018 (11:24)

ایبٹ آباد (این این آئی) ثوبیہ قتل کیس میں گرفتار بھائی نے بہنوئی سے ملکر  بہن صوبیہ بی بی کو ذبح کرنے کا اعتراف کر لیا, عدالت نے دونوں ملزمان کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل روانہ کر دیا۔

پولیس حکام نے صحافیوں کو بتایا کہ 8 فروری کو گلی بہن کے جنگل میں 20 سالہ غیر شادی شدہ ثوبیہ بی بی دختر مسکین کو ذبح کئے جانے والے کے حوالہ سے سیشن جج کی اجازت سے ثوبیہ بی بی کی قبر کشائی کی گئی جس میں ڈاکٹروں نے ثوبیہ بی بی کو چھری سے ذبح کئے جانے کا بتایا، ثوبیہ بی بی کے گلے کو انتہائی گہرائی تک چھری چلا کر ذبح کیا گیا تھا۔

ثوبیہ بی بی کے گھر والوں نے اس قتل کو خودکشی ظاہر کیا جس پر دوران تفتیش ثوبیہ بی بی کے حقیقی بھائی عارف جو ایک مدرسہ کا طالب علم ہے، سے تفتیش کی گئی تو اس نے دوران تفتیش تمام راز سے پردہ اٹھا دیا۔

عارف کی نشاندہی پر ثوبیہ بی بی کے سابق بہنوئی خان افسر ولد محمد اسلم کو بھی گرفتار کیا گیا، دونوں نے دوران تفتیش انکشاف کیا کہ ثوبیہ بی بی کے ایک مقامی لڑکے کے ساتھ ناجائز تعلقات تھے جس کی وجہ سے ثوبیہ بی بی حاملہ ہو گئی تھی۔

ایس ایچ او تھانہ میرپور سردار رفیق کے مطابق ملزمان کو جسمانی ریمانڈ ختم ہونے پر علاقہ مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا گیا جہاں ملزمان نے عدالت میں صوبیہ بی بی کو ذبح کرنے کا اعتراف کرلیا ہے جس کے بعد عدالت نے دونوں ملزمان کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل منتقل کردیا۔

مزیدخبریں