190 ملین پاؤنڈ کیس، عمران اور بشریٰ بی بی کیخلاف چارج شیٹ کی تفصیلات سامنے آ گئیں

190 ملین پاؤنڈ کیس، عمران اور بشریٰ بی بی کیخلاف چارج شیٹ کی تفصیلات سامنے آ ...
190 ملین پاؤنڈ کیس، عمران اور بشریٰ بی بی کیخلاف چارج شیٹ کی تفصیلات سامنے آ گئیں
سورس: فائل فوٹو

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (خصوصی رپورٹ) احتساب عدالت اسلام آباد میں زیر سماعت 190 ملین پاؤنڈز ریفرنس میں بانی پی ٹی آئی عمران خان اور بشریٰ بی بی کیخلاف چارج شیٹ سامنے آ گئی۔

"جنگ " میں شائع ہونیوالی  رپورٹ کے مطابق  27 فروری 2024 کو احتساب عدالت نمبر 1 اسلام آباد کے جج ناصر جاوید رانا نے اڈیالہ جیل میں 190 ملین پاؤنڈز ریفرنس کی سماعت کرتے ہوئے بانی پی ٹی آئی اور انکی اہلیہ بشریٰ بی بی پر فرد جرم عائد کی۔ چارج شیٹ میں عمران خان پر الزام لگایا گیا کہ انہوں نے بطور وزیر اعظم اپریل 2019 میں ریاض حسین ، علی ریاض سے سید ذوالفقار علی بخاری (زلفی بخاری ) کے ذریعے القادر یونیورسٹی پراجیکٹ نامی ٹرسٹ کیلئے عطیہ کی مد میں 458 کنال 4 مرلہ اور 58 مربع فٹ اراضی کی صورت میں فائدہ حاصل کیایہ مالی فائدہ اس وقت لیا گیا جب القادر ٹرسٹ یا یونیورسٹی کا کوئی وجود ہی نہیں تھا۔ بدلے میں عمران خان نے دیگر شریک ملزمان کیساتھ مل کر رجسٹرار سپریم کورٹ کے اکاؤنٹ میں 190 ملین پاؤنڈز میں سے 171.159 ملین پاونڈز کی غیر قانونی منتقلی ایڈجسٹمنٹ میں مدد کی۔

چارج شیٹ میں کہا گیا کہ عمران خان اور بشریٰ بی بی نے متعدد مواقع دینے کے باوجود مذکورہ معاملات کے حوالے سے معلومات فراہم کرنے سے انکار کیا۔ یہ اقدام نیشنل اکاؤنٹیبلٹی آرڈیننس 1999 کی سیکشن 9(1)(ii)(iv)(vi)(xii) کے تحت کرپشن کے زمرے میں آتا ہے جو نیب آرڈیننس 1999 کی سیکشن 10 اور شیڈول کے سیریل نمبر 2 کے تحت قابل سزا جرم ہے۔