پاکستان میں فلم سازی کے امکانات روشن ہیں،سہیل خان

پاکستان میں فلم سازی کے امکانات روشن ہیں،سہیل خان
 پاکستان میں فلم سازی کے امکانات روشن ہیں،سہیل خان

  

 لاہور (فلم رپورٹر)فلمساز وتقسیم کار سہیل خان نے کہا ہے کہ پاکستان میں فلم سازی کے روشن امکانات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مقامی سطح پر تیاری کی جانے والی نئی اچھی فلموں کی مارکیٹ 20 کروڑ روپے کے قریب پہنچ چکی ہے۔سہیل خان ڈیفنس میں واقع دفتر میں کلچر جرنلٹس فاﺅنڈیشن آف پاکستان کے مرکزی عہدیداروان اورد یگر شوبز صحافیوں کے اعزاز میں دیئے گئے ایک عصرانہ میں گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ پاکستان میں آئندہ چند برسوں کے دوران فلمسازی میں تیزی سے اضافہ متوقع ہے تاہم موجودہ پاکستان فلمسازوں ، ڈائریکٹرز کی اکثریت فلم انڈسٹری کو چھوڑ جائے گی۔ اس کی بڑی وجہ فلمسازوں کا سرمایہ کاری نہ کرنا نیز روایتی سوچ سے ہٹ کر نئی فلمیں تیار نہ کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے طویل تجربے کے بعد فلم سازی کے انداز کو بدلہ ہے آئندہ سے وہ اپنی نئی کو پروڈکیشن فلم ” شور شرابہ“ کو پنجابی کے بجائے اردو میں بنا رہے ہیں۔ یہ فلم پاکستان، بھارت سمیت دنیا کے مختلف ممالک میں نمائش کیلئے ریلیز کی جائے گی۔ سہیل خان نے کہا کہ فلم سازوں کو وزارت ثقافت کے نہ ہونے کی وجہ سے فلموں کی تیاری میں متعدد مشکلات کا سامنا ہے۔ انہوں نے فلم سنسر بورڈ کی مرکزی حیثیت کو بحال کرنے کا مطالبہ بھی کیا اور کہا کہ صوبائی سطح پر الگ الگ فلم سنسر بورڈز کے قیام سے فلمساز وتقسیم کاروں کیلئے مشکلات بڑھ گئی ہیں۔سہیل خان نے کہا کہ وہ مشترکہ فلمسازی کے دائرہ کار کو بھارت سمیت دنیا کے دیگر ممالک تک بڑھائیں گے۔ اس کیلئے سرمایہ کاری کرتے وقت ٹھوس منصوبہ بندی کی ضرورت ہوگی۔ سہیل خا ن نے صحافیوں کو بتایا کہ وہ مشترکہ فلمسازی کے ذریعے پاکستان کا نام دنیا بھر میں روشن کرینگے۔

مزید : کلچر