58فیصد علاقوں میں پولیو وائرس کی تصدیق محکمہ صحت میں تھر تھلی

58فیصد علاقوں میں پولیو وائرس کی تصدیق محکمہ صحت میں تھر تھلی

                                       لاہور(جاوید اقبال) صوبائی دارالحکومت میں پولیو کیخلاف چلائی جانیوالی مہم غیر موثر ثابت ہو گئی، شہر لاہور کے 58 علاقوں میں سیوریج کے پانی سے پولیو جبکہ گھروں میں ڈینگی لاروے کے وائرس کی تصدیق ہو گئی ہے جس سے محکمہ صحت اور ضلعی حکومت میں تھرتھلی مچ گئی ہے،عالمی ادارہ صحت کی ٹیموں نے شہر کے 100 مقامات سے سیوریج کے پانی کے نمونہ جات حاصل کئے اور ان سے پولیو وائرس کے ٹیسٹ کئے ،دوران تجزیہ 100 میں سے 44 مقامات سے حاصل کئے گئے سیوریج کے پانی سے پولیو کے وائرس کی موجودگی کی تصدیق ہو گئی اس حوالے سے رپورٹ محکمہ صحت اور پنجاب حکومت کو پیش کر دی گئی ہے ، دوسری طرف داتا گنج بخش ، راوی ٹاﺅن، نشتر ٹاﺅن اور اقبال ٹاﺅن کے مختلف علاقوں ، گھروں ، پارکوں میں جمع پانی اور کباڑ خانوں میں ڈینگی مچھروں کے لاروے برآمد ہوئے ہیں جس سے شہر میں ڈینگی وائرس اور پولیو کے حملہ آور ہونے کے خطرات بڑھ گئے ہیں، اسی حوالے سے ڈی سی او لاہور ڈاکٹر احمد جاوید قاضی کا کہنا ہے کہ لاہور کو ڈینگی اور پولیو کے وائرس سے محفوظ کرنے کیلئے موثر اقدامات کئے جائیں گے اور مہم میں مزید تیزی لائی جائے گی اور خطرناک قرار دیئے گئے علاقوں میں جنگی بنیادوں پر پولیو اور ڈینگی کے خاتمے کیلئے دوبارہ سے مہم شروع کر دی جائے گی دوسری طرف ماہرین کا کہنا ہے کہ پولیو وائرس کے خاتمے کیلئے ویکسین اور قطرے پلانے کی مہم کا میاب نہیں ہو سکی جس کے باعث سیوریج کے پانی سے وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ پولیو وائرس کے کیسز شہر میں موجود ہیں اور وائرس بھی موجود ہے جس کے خاتمے کیلئے ضلعی حکومت کو موثر انداز میں جنگی بنیادوں پر مہم شروع کرنا ہوگی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1