ہمارے بزرگوں نے علم کے میدان میںانقلابی کارنامے سر انجام دیے،سعدیہ راشد

ہمارے بزرگوں نے علم کے میدان میںانقلابی کارنامے سر انجام دیے،سعدیہ راشد

لاہور(پ ر)موجودہ دور میں انسان ہواﺅں کے دوش پر اُڑنے لگے ہیںمہینوں کا سفر گھنٹوں میں طے ہونے لگا ہے کمپیوٹر کی ایجاد نے تو تہلکہ مچادیا ہے دنیا ایک ”گلوبل ویلیج“ بن کر رہ گئی ہے انفارمیشن ٹیکنالوجی سے آج جو کام لیا جارہا ہے چند سال پہلے اس کاتصور بھی نہیں تھادنیا کے کسی بھی کونے میں کوئی واقعہ رونما ہوآپ اُسے چند منٹوں میں دیکھ سکتے ہیںان خیالات کا اظہار گزشتہ روز صدر ہمدرد فاﺅنڈیشن پاکستان سعدیہ راشد نے ”سائنس پڑھو -آگے بڑھو“(قولِ سعید )کے موضوع پر ہمدرد نونہال اسمبلی سے نیشنل میوزیم آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ،جی ٹی روڈ لاہور میں خطاب کرتے ہوئے کیاانہوں نے مزید کہا کہ آج ہم ان تکالیف کو بھول گئے ہیں جو ہمارے بزرگوں نے اُٹھائیںمسلمانوں نے اپنے دور عروج میںجو علم کی اشاعت کے لیے انقلابی کارنامے انجام دیے آج بھی ان کارناموں کا اعتراف یورپ کے ماہرین اور سائنس دان کرتے ہیںطب، سائنس اور سرجری میں مسلمانوں کے کارناموں کا اعتراف ہر منصف مزاج مورخ نے کیا ہے ہمیں کسی احساس کمتری میں مبتلا ہونے کی ضرورت نہیںہمارے بزرگوں نے سائنس کو ترقی دی اور آج بھی ڈاکٹر سلیم الزماں صدیقی، ڈاکٹرعبدالسلام، ڈاکٹر عبدالقدیر، ڈاکٹر ثمر مبارک مند اور ڈاکٹر عطاءالرحمن جیسے پاکستانی سائنس دانوں کی عظمت کو دنیا مانتی ہے ہمدرد نونہال اسمبلی کی بزم میں ایڈیشنل سیکرٹری پی اینڈ ڈی اسکولز پنجاب مرزا محمود الحسن نے بطور مہمانِ خصوصی شرکت کی جبکہ ایڈمین آفیسر /بائیولوجسٹ نیشنل میوزیم آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی صائمہ ریاض اور گرافک اینڈ ایگزیبٹ ڈیزائنر/ پبلک ریلیشنز آفیسرنیشنل میوزیم آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فاطمہ منظر نے کلماتِ ابتدایہ پیش کئے نونہال مقررین میں نویرا بابر،میراب خان ، ناعمہ فیاض ، علیحہ احمد ، سلمان حمید، جنت فاطمہ اور سید حارث علی شامل تھے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1