اندرونی و بیرونی خطرات پر نظر رکھے ہوئے ہیں ،جنرل راحیل شریف

اندرونی و بیرونی خطرات پر نظر رکھے ہوئے ہیں ،جنرل راحیل شریف

        راولپنڈی (مانٹیرنگ ڈیسک+ اے این این) چیف آف دی آرمی سٹاف جنرل راحیل شریف نے کہا ہے کہ فوج اندروانی و بیرونی خطرات پر نظر رکھے ہوئے ہیں اور ان کے سامنے دیوار بن کر کھڑی ہے، پاکستان کے عوام اور تمام ادارے پاکستان کو درپیش جنگ میں برسرِ پیکار ہیں اور ہر آنے والا دن عوام اور فوج کے رشتے کو مضبوط سے مضبوط تر کرے گا۔ راولپنڈی میں یومِ شہداءکے موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ریاست کے باغی آئین کے دائرے میں واپس آجائیں ورنہ ان سے نمٹنے میں کوئی گنجائش نہیں اور پاکستان کے غیور عوام اور فوج انہیں کیفر کردار تک پہنچانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ تفصیل کے مطابق یوم شہداءکی مناسبت سے سب سے بڑی تقریب جی ایچ کیو راولپنڈی میں ہوئی جس میں چیف آف آرمی سٹاف جنرل راحیل شریف نے شہداءکی یادگارپر پھول چڑھائے اور فاتحہ خوانی کی۔ اس موقع پر پاک فوج کے چاک چوبند دستے نے شہداءکو سلامی پیش کی۔ تقریب میں شہداءکے لواحقین اور اہم سول و عسکری حکام نے شرکت کی۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے کہا کہ آج کا دن ان شہداءکے نام ہے جنہوں نے 1947 سے 2014ءتک وطن عزیز کو درپیش اندرونی و بیرونی خدشات کا مقابلہ کرتے ہوئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا۔ ہم شہداءکے لواحقین کو سلام پیش کرتے ہیں جنہوں نے اپنے پیارے وطن کے تحفظ پر نچھاور کردئیے۔ ہم ان غازیوں کی بہادری کو بھی خراج تحسین پیش کرتے ہیں جو وطن کے دفاع کیلئے دشمن کے سامنے سینہ سپر ہوگئے۔ انہوں نے کہاکہ بحیثیت قوم ہمیں ایسی جنگ کا سامنا ہے جس سے افواج پاکستان کے ساتھ ریاست اور پاکستانی عوام برسرپیکار ہیں۔ اس مناسب سے میں نہ صرف افواج پاکستان ، ایف سی رینجرز، فرنیٹیئر کانسٹیبلری ، پولیس بلکہ ان ہزاروں محب وطن خراج تحسین پیش کرنا چاہتا ہوں جنہوں نے اس جنگ میں اپنی قیمتوں جانوں کا نذرانہ پیش کیا ۔ وطن عزیز کے استحکام کیلئے ان کا کردار لازوال اور ناقابل فراموش ہے ۔ ہمارے ملک کو بے شمار اندرونی بیرونی چیلنجز کا سامنا ہے مگر میں یقین دلاتا ہوں کہ افواج پاکستان سکیورٹی کے دیگر اداوروں خصوصاً سول آرمڈ فورسز ، پولیس انٹیلی جنس اداروں کے ساتھ مل کر اپنے فرائض پورے کرتے ہوئے ان تمام خطرات کے خلاف دیوار بن کر کھڑے رہے اور ان دشمن کے عزائم کو ناکام بنا دینگے۔آرمی چیف نے کہا کہ پاک فوج دہشت گردی کے خاتمے اور امن کی بحالی کیلئے ہر کوشش کی حمایت کرتی ہے یہ ہماری دلی خواہش ہے کہ پاکستان کے خلاف سرگرم تمام عناصر غیر مشروط طورپر ملک کے آئین و قانون کی مکمل پابندی کریں اور آئین کے دائرے میں واپس آئیں بصور ت دیگر ریاست کے باغیوں سے نمٹنے کے معاملے میں شک کی کوئی گنجائش نہیں۔پاکستان کے غیور عوام اور افواج پاکستان ایسے عناصر کو کیفرکردار پہنچانے کی بھرپور صلاحیت رکھتے ہیں۔ جنگی محاذ خواہ اندرونی ہو یا بیرونی قومیں لڑا کرتی ہیں اور اپنی افواج کا حوصلہ بلند رکھتی ہیں۔ پاک افواج کی طاقت کا سرچشمہ عوام کا اعتماد ہے اور پاکستانی قوم نے ہمیشہ اپنی افواج کا ساتھ دیا۔ قوم کی حمایت کے ساتھ یقیناً ہمارے بہادر سپوت قومی سلامتی کیلئے بڑی سے بڑی قربانی دینے سے دریغ نہیں کرینگے۔ انشاءاللہ ہر آنے والا دن عوام اور افواج پاکستان کے رشتے کو مضبوط سے مضبوط تر کرے گا۔جنرل راحیل شریف نے کہاکہ افواج پاکستان نے دفاع وطن کے بنیادی فریضے کے ساتھ ساتھ ملک کی تعمیر و ترقی و فلاح بہبود میں بھی اہم کردار ادا کیا ہے ۔1947ءمیں مہاجرین کی بحفاظت پاکستان آمد اور آباد کاری سے لیکر سوات اور فاٹا کی گھروں کی واپسی اور بحالی پر مسلح افواج کا کردار نمایاں رہا ہے ۔ افواج پاکستان وفاق کی تمام اکائیوں کی نمائندہ قومی یکجہتی کی آئیند دار ،پاکستانیت کی علامت اور دفاع وطن کی ضمانت ہے ۔ حالیہ برسوں میں بلوچستان سے تعلق رکھنے والے 20 ہزار سے زائد نوجوانوں نے پاک فوج میں بحیثیت آفیسر اور سولجرز شمولیت اختیار کی ہے اور صوبہ بلوچستان کے لوگوں کا افواج پاکستان پر بھرپور اعتماد کا ثبوت ہے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کی نصف سے زائد آبادی نوجوانوں پر مشتمل ہے ۔ بے پناہ صلاحیتوں کے مالک ہمارے نوجوان قوم کا قیمتی اثاثہ ہیں اور پاکستان کا مستقبل ہیں۔ افواج پاکستان کے زیر نگرانی مختلف تعلیمی اور تکنیکی ادارے چل رہے ہیں جن میں قوم کے ہزاروں بچے زیر تعلیم ہیں اور ان میں سے زیادہ تر کا تعلق بلوچستان ، فاٹا اور ملک کے دور دراز علاقوں سے ہے ۔جنرل راحیل شریف نے کہاکہ عالمی امن کا قیام اور اس کیلئے افواج پاکستان کا کردار نمایاں ہے ۔ اقوام متحدہ کی امن فوج نے پاک افواج ہر اول دستے کا کردار ادا کررہی ہے ۔ اقوام متحدہ کی تاریخ میں پاکستانی امن دستوں کی تعداد دیگر ممالک سے کئی زیادہ ہے ۔ یہ اقوام عالم کا ہماری قوم اور فوج پر اعتماد کا مظہر ہے اور ہمارے لئے باعث فخر ہے ۔انہوں نے کہاکہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے یہ بین الاقوامی تنازعہ ہے جس پر اقوام متحدہ کی قراردادیں موجود ہیں اور اس کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق حل کرنا علاقے کی سلامتی پائیدار امن کیلئے ناگزیر ہے۔ کشمیری عوام کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔ افواج پاکستان امن کی خواہاں مگر کسی قسم کی جارحیت کا جواب دینے کیلئے ہمہ وقت تیار بھی ہے ۔ افواج پاکستان جمہوریت کے استحکام آئین و قانون کی پاسداری اور بالا دستی پر یقین رکھتی ہے یہ ہی وہ واحد راستہ ہے جس پر گامزن رہ کر ہم ترقی یافتہ ممالک کی صف میں کھڑے ہوسکتے ہیں اس لئے لازم ہے کہ قائداعظم محمد علی جناح کے دئیے گئے سنہری اصول ، ایمان ، اتحاد ، نظم کو ہمیشہ یاد رکھا جائے اور ملک کے تمام ادارے ایک دوسرے کے ساتھ مل کر اس نظام کی کامیابی کیلئے ہمہ وقت کوشاں رہیں۔آرمی چیف نے کہاکہ پاکستان کی مسلح افواج ملک کی ترقی اور عوام کی خوشحالی کیلئے ہمیشہ کام کرتی رہے گی۔ ریاست کے تمام اداروں کے ساتھ ساتھ قومی تعمیر میں سول سوسائٹی اور میڈیا کاکردار بھی قابل تعریف ہے ۔ میڈیا نے ہر موڑ پر وطن عزیز کی سلامتی کے حق میں عوامی رائے کو ہموار کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے اور میڈیا کی آزادی اور ذمہ دارانہ صحافت پر یقین رکھتے اور ان کی قربانیوں کو سراہتے ہیں۔ پاک فوج کے سپہ سالار نے کہاکہ تمام مشکلات کے باوجود پاکستان اپنے استحکام ، خوشحالی کی منزل کی طرف رواں دواں ہے ۔ 18 کروڑ سے زائد محنتی ، ہنر مند عوام پر مشتمل ہمارا وطن ہر لحاظ سے انتہائی اہم مقام پر کھڑا ہے انشاءاللہ اقوام عالم میں صلاحیتوں کے بل بوتے پر اپنا صحیح مقام حاصل کرکے رہیں گے ۔ شہادت ایک عظیم رتبہ ہے آپ کی افواج جذبہ شہادت سے سرشار ہے ۔ خوش نصیب ہے وہ ہمارے ساتھی جنہیں یہ سعادت نصیب ہوئی ۔ آج کا دن پاک سرزمین کی حفاظت کیلئے یوم تجدید عہد بھی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ہم شہداءکے لواحقین کیلئے دعاگو ہیں اللہ تعالیٰ انہیں صبروجمیل عطا فرمائے ہم باحیثیت قوم ان کے ساتھ کھڑے رہیں گے۔ افواج پاکستان ملک کی سلامتی کو درپیش ہر طرح کی اندرونی و بیرونی خطرات پر نظر رکھے ہوئے ہیں اور ان سے نمٹنے کیلئے بھرپور صلاحیت رکھتی ہے ۔آرمی چیف نے کہاکہ مسلح افواج قومی سلامتی اور مادر وطن کی ترقی اور خوشحالی کیلئے اپنا کردار ادا کرتی رہے گی یہ ہمارامشن ہے کہ اندرونی و بیرونی طورپر محفوظ پاکستا ن ہو۔ قوم کے شہیدوں کا خون رائیگاں نہیں جانے دیا جائے گا اور یہ ہمارا فرض ہے کہ ہم اگلی نسل کو ایک مستحکم اور خوشحال پاکستان حوالے کریں۔

مزید : صفحہ اول