مقبوضہ کشمیر میں کرفیو نافذ،انتخابات ڈرامہ فلاپ

مقبوضہ کشمیر میں کرفیو نافذ،انتخابات ڈرامہ فلاپ
مقبوضہ کشمیر میں کرفیو نافذ،انتخابات ڈرامہ فلاپ

  

سرینگر (مانیٹرنگ ڈیسک)بھارت میں جاری عام انتخابات کے دوران مقبوضہ وادی کشمیر میں کرفیو لگا دیا گیا ہے۔ گزشتہ روز نوکدال میں پولیس کی فائرنگ سے شبیر احمدنامی طالب شہید ہوگیا۔طالب علم کی شہادت کے بعد وادی میں حالات کشیدہ ہیں جس کے پیش نظر کرفیو لگا دیا گیا ہے۔مقبوضہ کشمیر میں ووٹنگ کے بعد حریت کانفرنس کے رہنماؤں نے آج وادی میں ہڑتال کی کال دے رکھی ہے۔حریت رہنماؤں کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا کہ بھارت نے پچھلے66برسوں میں کشمیرپرناجائز قبضہ رکھا ہے اور وہ انتخابات کاڈھونگ رچاکر عالمی برادری کوگمراہ کرنے کی کوشش کررہاہے، مقررین کاکہنا تھا کہ بھارت مقبوضہ وادی میں استواب رائے کروائے تاکہ کشمیریوں کواپنے  حق کے تعین کا موقع اختیارمل سکے۔یادرہے کہ کشمیر میں الیکشن کا ڈرامہ کامیاب بنا نے کے لیے بھارتی حکومت نے کشمیریوں پرظلم کے پہاڑ گرائے۔مقامی اخبارات کے مطابق 1300سے زائد افراد اس وقت بھارتی حکومت کی تحویل میں ہیں۔زیر حراست افراد میں سے اکثریت کو کئی کئی سال پرانے مقدمات میں گرفتار کیا گیاہے، ان تمام اقدامات کے باوجودگزشتہ روز عوام کی پولنگ میں دلچسپی کہیں نظر نہ آئی۔کئی ضلعوں میں تو 10فیصد سے بھی کم لوگوں نے ووٹ ڈالا۔اس کے علاوہ مختلف علاقوں میں پولیس اور کشمیر ی نوجوانوں میں جھڑپوں کا سلسلہ جاری رہا۔

مزید : بین الاقوامی