شام میں دہشت ناک واقعہ

شام میں دہشت ناک واقعہ
شام میں دہشت ناک واقعہ

  

رقہ (نیوزڈیسک    ) نام نہاد ”بہار عرب“ (عرب سپرنگ) نے جب سے مشرقِ وسطیٰ میں سراٹھایا ہے متعدد عرب ممالک بدترین بے امنی اور تشدد کی لپیٹ میں ہیں۔ شام بھی اس وقت اسی بہار عرب کے ثمرات سے مستفید ہورہا ہے اور یوں لگتا ہے کہ ملک کے ہر گوشے میں آگ لگی ہوئی ہے۔ قتل و غارت روز کا معمول بن چکی ہے۔ ایک ایسے ہی دہشت ناک واقعے میںشدت پسند تنظیم آئسس (دولت اسلامیہ فی العراق و شام) نے سات افراد کو پھانسی پر چڑھادیا اور ان میں سے 2 کو بیچ چوراہے صلیب پر چڑھایا گیا۔ یہ خوفناک مناظر شمال شرقی شام کے شہر رقہ کے ایک چوراہے پر عوام الناس کی نظروں کے سامنے پیش آئے۔ تنظیم کے ایک نمائندے نے بتایا کہ ان افراد کو تنظیم پر حملہ آور ہونے کی سزا دی گئی ہے۔ اس نے بتایا کہ ان افراد نے تنظیم کے ایک رکن پر رقہ شہر میں گرنیڈ سے حملہ کیا تھا جس میں ایک شہری کی ٹانگ اڑ گئی اور ایک بچہ ہلاک ہوگیا تھا۔ برطانیہ کے ایک انسانی حقوق کے ادارے نے دو مصلوب کئے گئے افراد کی تصویر جاری کی ہے جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ان دونوں کے شہر کے ایک چوراہے میں عوام کے سامنے مصلوب کیا جارہا ہے۔ ان میں سے ایک کے جسم پر ایک کپڑا لپیٹا ہے جس پر لکھا ہے کہ اس شخص نے مسلمانوں کے خلاف جنگ کی ہے اور اس جگہ گرنیڈ پھینکا ہے۔

مزید : انسانی حقوق