دمہ کی سب سے بڑی وجہ ماحولیاتی آلودگی،سگریٹ نوشی،دھواں ہے،ڈاکٹر اعظم مشتاق

دمہ کی سب سے بڑی وجہ ماحولیاتی آلودگی،سگریٹ نوشی،دھواں ہے،ڈاکٹر اعظم مشتاق

ملتان(نمائندہ پاکستان)دمہ کے عالمی دن کے موقع پر نشتر میڈیکل یونیورسٹی شعبہ پلمنولوجی ،پروفیسر ڈاکٹر اعظم مشتاق نے ملتان پریس کلب میں پریس کانفرنس کی ،اس دوران (بقیہ نمبر34صفحہ12پر )

انہوں نے کہا کہ پوری دنیاکے علاوہ پاکستان میں بھی دمے کا مرض بڑھتا چلا جارہا ہے جس کی سب سے بڑی وجہ ماحولیاتی آلودگی سگریٹ نوشی اور دھواں ہے ،دمہ کے مریضوں کے لیے تھریشر کا موسم انتہائی خطرناک ہے ایسے موسم میں دمے کے مریضوں کو احتیاط کرنی چاہیے اور ماسک بھی پہننا چاہیے ۔دمے کے امراض میں ہر سال بڑوں میں 15فیصد اور بچوں میں 10فیصد اضافہ ہورہا ہے،ہر سال 70سے 80ہزار مریض دمے کے مرض کے باعث موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں اس سلسلے میں چیسٹ سوسائٹی عوام کی آگاہی کے لیے سیمینار بھی منعقد کرتی ہے۔جبکہ میڈیکل کیمپ بھی لگایا جاتا ہے ،جس میں دمے کے مریضوں میں مفت ادویات فراہم کی جاتی ہیں۔

ڈاکٹر اعظم مشتاق

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...