مہنگائی نے غریب عوام سے جینے کا حق بھی چھین لیاہے،سماجی رہنما

مہنگائی نے غریب عوام سے جینے کا حق بھی چھین لیاہے،سماجی رہنما

ملتان (سٹی رپورٹر)مختلف سماجی تنظیموں میں کام کرنے والے سماجی رہنماؤں نے کہاہے کہ عاشر یونس ، راجیش بوٹہ ، عمارہ نزیر ، جاوید نزیر ، صائمہ علی، پاکستان فورم میں اظہار خیال کرتے (بقیہ نمبر11صفحہ12پر )

ہوئے کہاہے کہ آئے روز کی مہنگائی نے غریب عوام سے جینے کا حق بھی چھین لیا ہے جس کی وجہ سے وہ خود کشیوں پر مجبور ہوگئے ہیں انہوں نے مزید کہاہے کہ مہنگائی ، بد امنی اور بجلی و گیس کی لوڈ شیڈنگ سے مزدور سب سے زیادہ متاثر ہے ۔ اشیاء ضرورت کی قلت کا فائدہ ہمیشہ سرمایہ دار کو ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نجکاری کے نام پر مزدوروں کا معاشی قتل کیا جا رہا ہے۔ گھروں میں کام کرنے والی خواتین ، کھیتوں میں کام کرنے والے دیہی مزدور اور غیر صنعتی لیبر کے قوانین آج تک نہیں بن سکے ،بھٹو دور میں مزدوروں کیلئے جو قوانین بنے ان پر عمل درآمد انہیں ہواجسکی وجہ سے مزدور استحصال کا شکا رہوا ہے انہوں نے کہاہے کہ آج مزدروں کی حالت شکاگو کے مزدور سے بھی بد تر ہے 1886ء میں شکاگو کا مزدور 12 اور 16 گھنٹے لیبر کے خلاف علم بغاوت بلند کیا تھا آج دیہات کا مزدور 24 گھنٹے کا ملازم ہے اور تنخواہ نہایت قلیل۔ حالانکہ تاریخ اٹھا کر دیکھیں تو مزدوروں کی تنخواہ ایک تولہ سونے کے برابر ہمیشہ رہی انہوں نے کہاہے کہ ماحولیاتی آلودگی اور ہیلتھ سیفٹی نام کی کوئی چیز موجود نہیں، مزدوروں کی اکثریت مختلف عوارض کا شکار ہے۔ علاج کا انتظام نہیں ، ڈاکٹر لوٹ رہے ہیں ۔ئیکی وسیب میں ٹیکس فری انڈسٹریل سٹیٹ زون قائم کیا جائے ۔ شوگر ملوں میں وسیب کے مزدورں پر ظلم بند کرایا جائے ۔ انڈسٹری میں مقامی لوگوں کی 80 فیصد ملازمتوں کا حق تسلیم کیا جائے اور مزدوروں کی تنخواہ ایک تولہ سونے کے برابر کی جائے۔

سماجی رہنما

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...